ایک ہزار اور پانچ سو کے نوٹ بند کرنے کے فیصلہ کے خلاف پارلیمنٹ کی کارروائی دن بھر کے لیے ملتوی

نئی دہلی: پانچ سو اور ہزار روپے کے نوٹ بند کرنے کے خلاف حزب اختلاف کے اراکین نے آج لوک سبھا و راجیہ سبھا میں زبردست ہنگامہ کیا جس کی وجہ سے وقفہ سوالات کے دوران شو ر شرابہ ہوا اور ایک بار کے التوا کے بعد دونوں ایوانوں کی کارروائی دن بھر کے لئے ملتوی کرنی پڑی۔ لوک سبھا میں صبح گیارہ بجے ایوان کی کارروائی شروع ہونے پر اسپیکر نے جموں کشمیر میں اڑی اور کئی دیگرمقامات پر دہشت گردانہ حملوں میں کئی فوجیوں کے شہید ہونے اور دیگر واقعات میں لوگوں کی ہلاکت پر خاموش رہ کر تعزیت کا اظہار کرنے کے بعد جوں ہی کارروائی کو آگے بڑھایا، تمام اپوزیشن اراکین کام روک کربازار میں بڑے نوٹوں بند کردیے جانے کے معاملے پر فوراً بحث کرانے کا مطالبہ کرتے ہوئے اسپیکر کی نشست کے سامنے آگئے۔ اسپیکر نے اراکین کو ان کے مطالبہ پر غور کرنے کی یقین دہانی کراتے ہوئے انہیں پرسکون رہ کر اپنی سیٹ پرجانے کے لئے کہا لیکن وہ اپنے مطالبہ پر مصر رہے اور مسلسل ہنگامہ کرتے رہے۔
زبردست ہنگامہ کے مدنظر پارلیمانی امور کے وزیر اننت کمار نے کہا کہ حکومت ضابطہ 193 کے تحت بحث کرانے کو تیار ہے لیکن اراکین اس سے مشتعل ہوکر مزید ہنگامہ کرنے لگے۔ مسٹر کمار نے کہا کہ نوٹ بندی سے ملک میں کالے دھن پر روک لگے گی اس کے لئے حکومت نے 500اور 1000روپے کے نوٹ بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ وہ اس معاملے پر ضابطہ 193 کے تحت بحث کرانے کے لئے تیار ہے۔ لیکن اپوزیشن اراکین تحریک التوا لاکر ضابطہ 56کے تحت بحث کرانے پر زور دے رہے تھے۔ اس درمیان اسپیکر نے وقفہ صفر شروع کردیا اور پورے وقفہ صفر میں اپوزیشن اراکین اسپیکر کی نشست کے سامنے آکر ہنگامہ کرتے رہے۔ وقفہ سوالات ختم ہونے کے بعد اسپیکر نے مختلف اپوزیشن اراکین کے تحریک التواکو نامنظور کرنے کی جانکاری دی اور ضروری دستاویزات ایوان کی میز پر رکھوائے۔ اس کے بعد انہوں نے اپوزیشن اراکین سے اپیل کی کہ وہ اپنی سیٹ پر بیٹھ جائیں تو وہ نوٹ بندی پر بحث کرانے کو تیار ہیں۔
کانگریس کے لیڈر ملک ارجن کھڑگے نے کہا کہ وہ ضابطہ 56کے تحت بحث کرانے کے حق میں ہیں جس پر بحث میں سب کی رائے آنے کے بعد حکومت کا جواب اور ووٹنگ ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ وہ اس معاملے پر ضابطہ 193 کے تحت بحث کرانے کے حق میں نہیں ہیں۔ محترمہ مہاجن نے کہا کہ وہ اپنی اپنی جگہ پر بیٹھ جائیں۔ حکومت بھی بحث کے لئے تیار ہے۔ وہ جس ضابطہ کے تحت بحث چاہتے ہیں۔ اسی ضابطہ کے تحت بحث ہوسکتی ہے لیکن ایسا نہیں ہوتا کہ اپوزیشن ہنگامہ کریں اور وہ بحث شروع کرائیں۔ راجیہ سبھا میں بھی نوٹ بند کرنے کے معاملہ پر حزب اختلاف نے کام کاج نہیں ہونے دیا ۔ راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر غلام نبی آزاد نے کہا کہ مودی حکومت کا نوٹ بند کرنا اڑی حملہ جیسا ہے۔جس پر وزیر قانون وینکیا نائیڈو نے شدید رد عمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ اپوزیشن لیڈر کو وزیر اعظم کے اس اقدام کا پاکستان کے دہشت گردانہ حملوںسے موازنہ کرنے پر معافی مانگنی چاہیے کیونکہ ان کے اس بیان سے ملک کی توہین ہوئی ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Lok sabha rajya sabha adjourned after opposition uproar on demonetisation in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply