وزارت دفاع کے دفاعی مطالبات زر لوک سبھا میں منظور

نئی دہلی:حکومت نے دفاعی خریداری میں کمی کر دیے جانے کے اپوزیشن کے الزامات کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے لوک سبھا میں کہا کہ ملک کی آن بان شان اور سرحد کی حفاظت کے لئے فنڈز کی کمی آڑے نہیں آنے دی جائے گی۔ دفاع کے وزیر مملکت سبھاش بھامرے نے محکمہ دفاع کے لئے مطالبات زر پر بحث کا جواب دیتے ہوئے ایوان کو یقین دلایا کہ حکومت نے 2016-17 کے دفاعی بجٹ کے تخمینوں کے مقابلے میں مالی سال 2017-18 میں چھ فیصد کا اضافہ کیا ہے۔
اپوزیشن کو اس بات کا وہم ہے کہ دفاعی خریداری کم ہو رہی ہے، لیکن ایسا قطعی نہیں ہے۔ حکومت نے ایسے کئی اقدامات کئے ہیں، جس سے نہ صرف ہندوستانی معیشت کا سائز بڑھے گا بلکہ دفاعی بجٹ پر بھی اس کا اثر نظر آئے گا، اور ملک کی فوجی طاقت بھی بڑھے گی۔ ان کے جواب کے بعد ایوان نے وزارت دفاع کے مطالبات زر کو صوتی ووٹ سے منظوری دے دی اور ریولشنری سوشلسٹ پارٹی کے این کے پرم چندرن، کانگریس کے ترون گگوئی اور جنتا دل یو کے کوشلیندر کمار کے کٹ موشن کو مسترد کر دیا۔ اس سے پہلے، بحث میں مداخلت کرتے ہوئے وزیر دفاع ارون جیٹلی نے کہا کہ یہ تصویر پیش کرنا غلط ہے کہ دفاعی خریداری نہیں ہو رہی ہے۔
انہوں نے کہا کہ دفاعی خریداری کے عمل کو اور آسان اور زیادہ شفاف بنایا گیا ہے تاکہ اس کے تعلق سے کسی طرح کا سوال نہ اٹھے۔ انہوں نے فوج کی ضرورت کے لئے حال میں خریدے گئے کئی آلات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ خریداری کا کام مسلسل ہو رہا ہے اور فوجی دستوں کی ضرورت کو پورا کیا جا رہا ہے۔ مسٹر بھامرے نے کہا کہ ملک کی داخلی ہی نہیں، بلکہ بیرونی سلامتی کے تئیں مودی حکومت پرعزم ہے اور سرحد پار کے دہشت گرد کیمپوں پر ہندستانی فوج کی سرجیکل اسٹرائک اس بات کا ثبوت ہے کہ جو بھی ہندستان کی طرف بری نظر سے دیکھے گا، اسے منہ توڑ جواب دیا جائے گا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Lok sabha passes defence expenditure bill in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply