حزب اختلاف کا نوٹ منسوخی اور حکمراں جماعت کا میرٹھ واردات پر لوک سبھا میں زبردست ہنگامہ

نئی دہلی: اپوزیشن نے ہزار اور پانچ سو کے نوٹ متروک قراردیے جانےکے معاملے پر آج لوک سبھا میں زبردست شور و غل کیاجس کی وجہ سے ایوان کی کارروائی دو بار ملتوی کرنی پڑی دوسری جانب حکمراں پارٹی نے میرٹھ میں ایک گٹکا کاروباری کے دفتر میں ڈکیتی اور لٹیروں کی فائرنگ میں اس کے بیٹے کی موت پر ہنگامہ کیا جس کی وجہ سے کارروائی دن بھر کے لئے ملتوی کر دی گئی۔
جمعہ کو ایوان کی کارروائی جیسے ہی شروع ہوئی، کانگریس اور ترنمول کانگریس کے اراکین نے نوٹ بند کر دیے جانےکے معاملے پر ہنگامہ شروع کر دیا، جس کی وجہ سے وقفہ سوال کے دوران کارروائی تقریباً پانچ منٹ تک ہی چل پائی۔ہنگامہ ہوتے دیکھ کر لوک سبھا اسپیکر سمترا مہاجن نے کارروائی بارہ بجے تک ملتوی کر دی۔ وقفہ صفر کے شروع ہونے پر وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے کرنسی منسوخی سے متعلق آرڈیننس کی جگہ جب بل پیش کیاترنمول کانگریس کے ارکان نے سخت اعتراض کرتے ہوئے بھاری ہنگامہ کیا جس کے باعث اسپیکر نے ایوان کی کارروائی ایک بجے تک کے لئے ملتوی کر دی۔

Title: lok sabha adjournment | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply