جیش محمد تنظیم کی گجرات میں مندرکو دھماکے سے اڑادینے اور پجاری کو ہلاک کرنے کی دھمکی

احمد آباد:گجرات کے آنند ضلع کے سارسا علاقہ میں واقع ست کیوال مندر کے پجاری اویچل داس جی مہاراج کو ایک مکتوب موصول ہوا ہے جس میں انہیں ہلاک کرنے اور مندر کو دھماکے سے اڑا دینے کی دھمکی دی گئی ہے۔
خط بھیجنے والوں نے خو د کو دہشت گرد تنظیم جیش محمد سے وابستہ بتایا ہے۔ست کیووال ایک مذہبی فرقہ ہے ،جس کے پیروکاروں کی علاقے میں کثیرتعداد ہے۔ کئی غیر اقامتی ہندوستانی بھی اس کے پیر وکار ہیں۔مقامی پولیس کے مطابق خط ہندی اور گجراتی میں لکھا گیا ہے۔
لکھنے والوں نے مندر کی ریکی کرنے کا دعوی کرتے ہوئے کہا کہ وہ بابری مسجد انہدام اور گودھرا فسادات کا بدلہ لینے کے لئے مندر کو اڑا دیں گے اور مہاراج کو بھی مار ڈالیں گے۔
مکتوب میں مزید لکھا گیا ہے کہ” پولس کچھ نہیں کر سکے گی حتیٰ کہ وزیر اعظم نریندر مودی بھی آپ کو نہیں بچا سکیں گے“آپ اس سے ضرور واقف ہوں گے کہ سورت میں پروین توگڑیا کے رشتہ دار کا کیا ہوا تھا۔یاد رہے کہ دو ہفتہ پہلے ہی سورت میں وشو ہندو پریشد لیڈر پروین توگڑیا کے کزن بھرت توگڑیا سمیت تین افراد کو چھرا گھونپ کر ہلاک کر دیا گیا تھا۔
اویچل داس جی جو کہ اکھل بھارتیہ سنت سماج کے قومی سکریٹری بھی ہیں،حال ہی میں اجین کے مہا کنبھ میلے میں شرکت کرنے گئے تھے جہاں انہوں نے گؤ کشی کے خلاف اظہار خیال کیا تھا۔پولس سپرنٹنڈنٹ سوربھ سنگھ نے کہا کہ پولس مندر اور پجاری کو تحفظ بہم پہنچائے گی۔

Title: letters purportedly from jem threaten to blow up temple | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply