بے نامی سودوں کے معاملہ میں محکمہ انکم ٹیکس کے لالو یادو کے22ٹھکانوں پر چھاپے

نئی دہلی:مبینہ بے نامی املاک کے حوالے سے منگل کے روز انکم ٹیکس والوں نے راشٹریہ جنتا دل( آر جے ڈی)کے سربراہ لالو پرساد یادو کی دہلی و گوڑ گاو¿ں میں رہائشی عمارتوں،اراضی اور دفاتر سمیت22 مقامات پر چھاپے مارے ۔ محکمہ نے آج صبح قریب آٹھ بجے سے ہی یہ چھاپے کی کارروائی شروع کی۔ یہ چھاپے ایک ہزار کروڑ روپے کی مبینہ بے نامی جائیداد کی خرید و فروخت کے سلسلے میں مارے گئے ہیں۔ بی جے پی لیڈر اور مرکزی وزیر روی شنکر پرساد نے گزشتہ ہفتے اس مبینہ خرید و فروخت کی تحقیقات کرانے کا مطالبہ کیا تھا۔ ان کا الزام ہے کہ مسٹر یادو کی بیٹی میسا بھارتی نے راجیہ سبھا انتخابات میں دیئے حلف نامہ میں اس مبینہ لین دین کا ذکر نہیں کیا تھا۔ یہ خرید و فروخت اس دوران کی گئی تھی جب مسٹر یادو سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ کی حکومت میں ریلوے کے وزیر تھے ۔چھاپوں کے بعد بہار کے دارالخلافہ پٹنہ میں لالو یادو کی سرکاری رہائش گاہ میں سناٹا چھاگیا۔ انکم ٹیکس کے چھاپے کی خبرملنے کے بعد یہاں ان کی اہلیہ اور سابق وزیراعلیٰ رابڑی دیوی کے نام سے مختص سرکاری رہائش گاہ 10 سرکولر روڈ کے باہر میڈیا کی بھیڑ لگی ہے لیکن گھر کے اندر سناٹا ہے۔
حالانکہ اس درمیان سینئر ایڈووکیٹ چترنجن سنہا کو بلایا گیا۔ادھر آر جے ڈی کے جنرل سکریٹری اور قانون ساز کونسلر مندریکا سنگھ یادو بھی مسٹر یادو کی رہائش گاہ پر پہنچے۔ اسی دوران جنتا دل یونائیٹڈ(جے ڈی یو)کے ترجمان نیرج کمار نے کہا کہ انہیں چھاپے کے سلسلے میں کوئی معلومات نہیں ہے اس لئے وہ اس بارے میں کچھ بھی نہیں کہیں گے۔وہیں جے ڈی یو کے ہی ایک دیگر ترجمان ڈاکٹر اجے آلوک نے کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی(بی جے پی)کے رہنما گزشتہ 40دنوں سے آر جے ڈی کے سربراہ اور ان کے خاندان کے لوگوں پر بے بنیاد الزام لگارہے تھے۔انہوں نے کہا کہ اس کے بعد وزیراعلیٰ نے کہا تھا کہ اگراس بارے میں کوئی ثبوت ہے تو بی جے پی کے لوگ آئندہ کی کارروائی کریں۔صرف میڈیامیں بیان دے کر تشہیر پانے کے ارادے سے الزام لگانا ٹھیک نہیں ہے۔ ڈاکٹر آلوک نے کہا کہ انکم ٹیکس کے چھاپے اور لوگوں کے یہاں بھی پڑتے رہے ہیں۔اس لئے جب تک چھاپے میں کیا ملتاہے،اس کا پتہ نہیں چل جاتا تب تک کوئی نتیجہ اخذ کرنا قبل از وقت ہوگا۔ مسٹر یادو کی رہائش گاہ پر جانے سے پہلے آ جے ڈی کے قومی نائب صدر رگھوونش پرساد سنگھ نے نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی شروع سے ہی مسٹر لالو پرساد یادو کو بربادکرنے اوران کے خاندان کو بدنام کرنے کی سازش کرتی رہی ہے۔
انہوں نے کہا کہ مسٹر یاد و مرکز کی مودی حکومت کے خلاف سبھی سیکولر پارٹیوں کو متحد کرنے کی کوشش کررہے تھے،اس لئے بی جے پی نے اس کوشش کو ناکام کرنے کے لئے مرکزی ایجنسی کے ذریعہ یہ کارروائی کی ہے۔ مسٹر سنگھ نے کہا کہ آر جے ڈی نے بھی بی جے پی لیڈر سشیل کمار مودی کے خلاف الزام لگائے تھے،لیکن مرکزی حکومت نے اس پر کوئی کارروائی نہیں کی۔اس کے برعکس مسٹر سشیل مودی کے الزام پر مرکزی حکومت نے مسٹر یادو کے خلاف یک طرفہ کارروائی کی ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ بدلے کے جذبے سے کی گئی کارروائی ہے لیکن آرجے ڈی کو عوام پر بھروسہ ہے۔ سابق وزیراعلیٰ اور ہندوستانی عوام مورچہ(ہم)کے صددر جیتن رام مانجھی نے کہا کہ وزیراعلیٰ نتیش کمار نے کل کہا تھا کہ مسٹر یادو کے خلاف جو الزام لگائے جارہے ہیں اس کی تحقیقات ریاستی حکومت نہیں بلکہ مرکزی حکومت ہی کراسکتی ہے۔مسٹر کمار نے حالات کے مطابق انصاف کی بات کہی تھی۔ مسٹر مانجھی نے کہا کہ مسٹر یادو کے خلاف الزامات کی جانچ اب مرکزی ایجنسی نے شروع کردی ہے۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نریندرمودی قانون کے مطابق کام کرنے کےلئے جانے جاتے ہیں۔اس معاملے میں بھی قانون اپنا کام کرے گا۔ بی جے پی قانون ساز پارٹی کے قائد اور سابق نائب وزیراعلیٰ سشیل کمار مودی نے کہا کہ وزیراعلی نتیش کمار کے مطالبے پرہی مرکزی حکومت نے مسٹر یادو کے خلاف کارروائی کی ہے۔مسٹر کمار نے 40دن کے بعد کل جب اس معاملے پر خاموشی توڑی تھی تب کہا تھا کہ مسٹر یادو پر عائد الزامات ریاستی حکومت کے دائرے میں نہیں آتے ،اس لئے مرکزی حکومت کو کارروائی کرنی چاہئے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Lalu yadavs benami property it raids 22 locations in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply