پانچ صوبوں میں لالو پرساد یادو کے12ٹھکانوں پر بیک وقت سی بی آئی چھاپے

نئی دہلی/پٹنہ، : مرکزی جانچ بیورو (سی بی آئی) نے ریلوے کے دو ہوٹلوں کے ٹینڈر میں ہوئی بے ضابطگی معاملے میں سابق ریلوے وزیر لالو پرساد یادو کی پٹنہ واقع رہائش گاہ سمیت ملک کے 12 ٹھکانوں پر چھاپے مار ے۔ سی بی آئی کے ایڈیشنل ڈائریکٹر راکیش استھانہ نے آج یہاں میڈیا کو بتایا کہ مسٹر یادو کے پٹنہ واقع رہائش گاہ کے علاوہ رانچی، دہلی، گروگرام اور بھوبنیشور کے 12 ٹھکانوں پر صبح ساڑھے سات بجے سے چھاپہ کی کارروائی ایک ساتھ شروع کی گئی، جو خبر لکھے جانے تک جاری تھی۔ انہوں نے بتایا کہ جانچ ایجنسی کو 2017 میں اس سلسلے میں ایک شکایت ملی تھی،جس کی بنیاد پر ابتدائی جانچ کی گئی۔ بادی النظر میں گڑبڑی کا پتہ چلنے کے بعد گزشتہ پانچ جولائی کو مسٹر یادو، ان کی اہلیہ اور سابق وزیر اعلی رابڑی دیوی ، بیٹا تیجسوی یادو، سابق مرکزی وزیر پریم چند گپتا کی بیوی سرلا گپتا، سجاتا ہوٹل پرائیویٹ لمیٹیڈ کے ڈائریکٹر وجے اور ونے کوچر، آئی آر سی ٹی سی کے اس وقت کے مینجنگ ڈائریکٹر پی کے گوئل اور کچھ نامعلوم افرد کے خلاف ایک مقدمہ درج کیا تھا۔ مسٹر استھانہ نے بتایا کہ یہ مقدمہ تعزیرات ہند کی دفعات 420 اور 120 بی اور انسداد بدعنوانی ایکٹ کی دفعہ 13 اور 13 (1) (ڈی) کے تحت دائر کیا گیا ہے۔
استھانا کے مطابق وزیرریل کے طور پر مسٹر یادو کے دور میں رانچی اور پوری کے بی این آر ہوٹل کودیکھ ریکھ کے لئے آئی آر سی ٹی سی کو سونپا گیا تھا، جسے بعد میں سجاتا ہوٹل پرائیوٹ لمیٹیڈ کو اونے پونے دام میں سونپ دیا گیا تھا۔اس کے بدلے میں سجاتا ہوٹا کے مالکان نے پٹنہ کے سگنا موڑ میں تین ایکڑ زمین مسٹر یادو کے قریبی رہے اس وقت کے مرکزی وزیر پریم چند گپتا کی بیوی سرلا گپتا کی کمپنی ڈیلائٹس مارکیٹنگ پرائیوٹ لمیٹیڈ کو کوڑیوں کے دام میں دی تھی۔ سی بی آئی افسر نے بتایا کہ ڈیلائٹس مارکیٹنگ کو دس پلا ٹ والی کل تین ایکڑ زمین صرف ایک کروڑ 47لاکھ روپے میں دی گئی تھی جب کہ اس کا سرکل ریٹ 2009 میں تقریباً دو کروڑتھا اور بازار قیمت تقریباً بیس کروڑ روپے تھی۔ محترمہ سرلا گپتا کی کمپنی 2010سے 2014 کے درمیان پوری زمین لارا پروجیکٹس لمیٹیڈ (لالو رابڑی پروجیکٹ) کو صرف 65 لاکھ روپے میں منتقل کردی تھی۔
اس وقت کے سرکل ریٹ کے حساب سے پوری زمین کی قیمت 32کروڑ روپے ہوچکی تھی جب کہ بازار قیمت 94کروڑ روپے تھی۔ انہوں نے بتایا کہ مسٹر یادو کے بیٹے اور بہار کے نائب وزیر اعلی تیجسوی یادو بھی بعد میں لارا پروجیکٹس کا حصہ بن چکے تھے اس لئے انہیں بھی اس معاملے میں ملزم بنایا گیا ہے۔ اس دوران پٹنہ سے موصولہ اطلاع کے مطابق چھاپے ماری کے دوران محترمہ رابڑی دیوی کی رہائش گاہ پر بڑی تعداد میں پولیس والوں کو تعینات کیا گیا اور گیٹ کے اندر کسی بھی لیڈر یا عام لوگوں کو داخل ہونے کی اجازت نہیں دی گئی۔ دس سرکلر روڈ جانے والے تمام راستوں کو بھی سیل کردیا گیا تھا۔ اس وقت کے ریلوے کے وزیر جھارکھنڈ کے رانچی اور اوڑیسہ کے پوری میں واقع ریلوے کے دو ہوٹلوں کے بدلے کروڑوں روپے کی بے نامی زمین پٹنہ میں ڈیلائٹ مارکیٹنگ کمپنی کے نام سے لینے کا الزام بی جے پی قانون ساز پارٹی کے لیڈر سشیل کمار مودی نے لگایا تھا۔ سی بی آئی کی ٹیم رانچی کے بی این آر چانکیہ ہوٹل میں بھی چھاپے ماری کرکے کاغذات کی جانچ کررہی ہے۔ پوری میں بھی ریلوے سے منسلک ہوٹل پر بیورو کی ٹیم چھاپے ماری کررہی ہے۔ اس کے علاوہ سی بی آئی کی ٹیم مسٹر یادو کی دہلی واقع رہائش گاہ پر بھی چھاپے ماری کررہی ہے۔ آر جے ڈی کے سینئر لیڈر اور سابق وزیر شیوانند تیواری ، سنجے گاندھی بوٹنیکل گارڈن میں چہل قدمی کے بعد جب دس سرکلر روڈ پہنچے تب انہوں نے نامہ نگاروں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ جس طرح مسٹر یادو مرکز کی نریندر مودی حکومت کو للکار رہے تھے اس سے لگتا تھا کہ یہ ہونا ہی تھا۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت سی بی آئی سمیت دیگر ایجنسیوں کا غلط استعمال کررہی ہے۔
مسٹر تیواری نے کہا کہ مسٹر یادو کے خلاف اس طرح کے چھاپے سے کوئی اثر پڑنے والا نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح کی جتنی بھی کارروائی ان کے خلاف ہوگی وہ اتنے ہی مضبوط بن کر ابھریں گے۔ دریں اثنابی جے پی کے سینئر لیڈر اور سابق وزیر نند کشور یادو نے کہا کہ جو جیسا کرے گا اسے ویسا ہی بھرنا پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ مسٹر یادو کے خلاف کروڑوں روپے کی مالیت کی غیر قانونی جائیداد جمع کرنے اور ریلوے کے وزیر کے عہدہ پر رہتے ہوئے بے ضابطگیوں کے سنگین الزامات لگے ہیں۔ اس سے قبل گذشتہ پانچ جولائی کو آر جے ڈی کے اکیسویں یوم تاسیس کے موقع پر مسٹر یادو کی پارٹی کے لیڈروں اور کارکنوں سے کہا گیاتھا کہ پٹنہ کے گاندھی میدان میں منعقد ہونے والی بی جے پی بھگاو ، دیش بچاو ریلی سے قبل انہیں جیل بھی جانا پڑسکتا ہے اور اس کے لئے تمام کارکنوں کو لالو بننا ہوگا۔ انہوں نے مرکزی حکومت پر ملک میں غیر اعلانیہ ایمرجنسی نافذ کرنے کا بھی الزام لگایا تھا۔ خیال رہے کہ اس سے قبل انکم ٹیکس محکمہ نے گذشتہ سولہ جولائی کو بینامی جائیداد اور آمدنی سے زیادہ جائیداد حاصل کرنے کے معاملے میں بھی دلی اور گروگرام میں آر جے ڈی سربراہ اور ان کے قریبی لوگوں کے بیس ٹھکانوں پرچھاپے ماری کی تھی۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Lalu yadav family raided and charged by cbi over land scam in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply