پتنگل مندر آتشزدگی کی سی بی آئی جانچ کرائی جائے: کیرل ہائی کورٹ

 تھروننت پورم:کیرل ہائی کورٹ نے کہا ہے کہ پوتنگل دیوی مندر میں آتشزدگی کے واقعہ کی مرکزی تفتیشی بیورو(سی بی آئی) سے تحقیقات کرائی جائے۔ اس خیال کا اظہار کرتے ہوئے ہائی کورٹ نے ریاستی حکومت کو یہ ہدایت بھی کہ اس سانحہ کے ذمہ داروں کو کسی قیمت پر نہ بخشا جائے اور ان کے خلاف سخت ترین کارروائی کی جائے۔ ہائی کورٹ نے یہ بھی کہا کہ مندر انتطامیہ کے ساتھ ساتھ کیرل کا محکمہ مال بھی اس آتشزدگی کا ذمہ دار ہے۔ عدالت نے یہ بھی معلومکیا کہ ضلع میں اس قسم کی آتش بازی روکنے میں متعلقہ حکام کا کیا رول رہا ۔
اور جن افسران نے اس سلسلہ مین غفلت برتی ہے ان کے خلاف کارروائی کی جائے۔عدالت نے ریاتی پولس اور ضلع حکام کو حکم دیا کہ اس ضمن میں حلف نامہ داخل کریں۔یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ کیرل کے وزیر اعلیٰ اومن چنڈی پہلے ہی اس سانحہ پر تبادلہ خیال کے لیے14اپریل کو کل جماعتی اجلاس طلب کر چکے ہیں۔ اس اجلاس میں آئندہ کا لائحہ عمل مرتب کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ ہائی کورٹ نے اس سانحہ کی سی بی آئی سے جانچ کرانے کا حکم نہیں دیا بلکہ صرف خیال ظاہر کیا ہے۔د ریں اثنا آگ لگنے کے بعد روپوش ہوجانے والے منتظمہ کمیٹی کے پانچ اراکین نے منگل کی صبح خود سپردگی کر دی۔
مندر ٹرسٹ کے صدر جے لال، سکریٹری جے کرشنا کٹی، شو پرساد، سریندر پلئے اور روندرن پلئے نے پولس کو مطلع کیا کہ وہ خود کو پولس کے حوالے کرنا چاہتے ہیں ۔ یہ اطلاع دے کر وہ پراوور کے قریب کپل میں واقع ایک مندر کے باہر پہنچے اور خود کو گرفتار کرا لیا۔یہ پانچوں کیرل کی تاریخ میں مندروں میں ہونے والے بدترین سانحات میں سے ایک کہے جانے والے اس سانحہ کے بعد سے ہی روپوش ہو گئے تھے۔

Title: kerala high court suggests cbi probe into kollam temple tragedy | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply