جموں و کشمیر میں کسی ہندو کو وزیر اعلیٰ مقرر کیا جانا چاہیے:سبرامنیم سوامی

نئی دہلی:بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے لیڈر سبرامنیم سوامی نے کہا ہےکہ جموں و کشمیر میں ایک ہندو کو وزیر اعلیٰ بنانے کی ضرور ت ہے۔میڈیا کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے سوامی نے کہا کہ جموں و کشمیر میں ایک ہندو وزیراعلیٰ ہونا چاہیے اور جب پی ڈی پی کسی ہندو یا سکھ کو اپنا ممبر بنا سکتی ہے تو ہم اس ممبر کو ریاست کا وزیر اعلیٰ بنا سکتے ہیں۔

سوامی نے کہا کہ نہرو کی تھوپی گئی یہ روایت کہ جموں و کشمیر کا وزیر اعلیٰ صرف کوئی مسلمان ہی ہو سکتا برداشت نہیں کیا جائے گا۔1965سے وادی کشمیر میں9وزیر اعلیٰ رہ چکے ہیں جن میں ایک بھی ہندو نہیں ہے۔اس سے پہلے ریاست کے سربراہ کو وزیر اعظم کہا جاتا تھا۔ریاست میں مختلف مواقع پر 8گورنر مقر کیے گئے۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق بھگوا پارٹی ریاست میں ہندو وزیر اعلیٰ مقرر کرنے کے لیے تانے بانے بن رہی ہے۔لیکن پی ڈی پی ممبران اسمبلی نے کہا کہ وہ وادی میں بی جے پی کے ساتھ مل کر حکومت بنانے پر آمادہ ہے لیکن وزیر اعلیٰ وادی کشمیر کا کوئی مسلمان ہی ہوگا۔

ممبر اسمبلی عابد انصاری نے کہا تھا کہ پی ڈی پی کے ممبران اسمبلی کا خیال ہے کہ سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے موروثی حکمرانیہ کو فروغ دیا ہے۔انہوںنے یہ بھی کہا کہ نااہل محبوبہ مفتی نہ صرف پی ڈی پی کو ایک ناکام پارٹی میں بدل چکی ہیں بلکہ حکومت چلانے میں بھی ناکام رہی ہیں۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Jk politics there should be a hindu chief minister in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply