فوجی سربراہ کے بیان پر سیاست کر کے کانگریس نے وہ گناہ کیا ہے جس کا کفارہ نہیں :بی جے پی

نئی دہلی:بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے آرمی چیف جنرل بپن راوت کی جموں و کشمیر کے نوجوانوں کو نصیحت کرنے کی حمایت کرتے ہوئے اس معاملے پر کانگریس کے رہنماؤں کے بیانات کی مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ فوج پر سیاست کرنا ایسا گناہ ہے جس کا کفارہ ادانہیں کیا جا سکتا۔ مرکزی وزیر اور بی جے پی کے سینئر لیڈر ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے یہاں ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ ریاست میں انسداد دہشت گردی مہم سے قبل آرمی چیف نے ریاست کے ان معصوم نوجوانوں کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے تشویش کا اظہار کیا ہے نہ کہ خبردار کیا ہے۔ لیکن فوجی سربراہ کے بیان پر کانگریس کے رہنماؤں نے جو بیان بازی شروع کی ہے، وہ انتہائی افسوس ناک اور پریشان کن ہے۔انہوں نے کہا کہ اس سے پہلے انہیں لیڈروں نے سرجیکل اسٹرائک کے وقت بھی فوج پر سوال اٹھائے تھے۔ ڈاکٹر سنگھ نے کہا کہ دنیا کے کسی بھی ترقی یافتہ جمہوریت میں بھی فوج کی کارروائی یا فوجی سربراہ کے ارادے پر سوال نہیں اٹھائے جاتے۔ انہوں نے کہا کہہم سکون سے اسی وقت آرام کرپاتے ہیں جب فوجی جاگتے ہیں۔ جب ہم کھا نا کھارہے ہوتے ہیں تو وہ بھوکے پیٹ سرحد پر مستعد رہتے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ کانگریس لیڈروں کے بیانات نہ صرف قابل مذمت بلکہ گناہ ہیں، ان کا کفارہ نہیں ہے۔ فوج کی آڑ میں سیاست کرنے سے سے ان کے حوصلوں پر اثر پڑتا ہے اور یہ ملک کیلئے نقصان دہ ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آرمی چیف کے بیان میں تنبیہ نہیں تشویش نظر آتی ہے۔ انسداد دہشت گردی کی کارروائی میں معصوموں کی جان نہ جائے اور وہ فائرنگ کی زد سے وہ دور رہیں، انہوں نے اس بات پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ریاست کے پولیس ڈائریکٹر جنرل کی جانب سے بھی جو مشورہ دیا گیا ہے اس میں بھی اسی طرح کی تشویش کا اظہار کیا گیا ہے۔ لیکن کانگریس لوگوں کو ایسا بتا رہی ہے کہ فوج گویا کشمیر کے نوجوانوں کے پیچھے پڑ گئی ہے۔ ووٹ کے لیے یہ پارٹی کسی بھی سطح پر اترنے کو تیار ہے۔ مرکزی وزیر نے کہا کہ کانگریس کی طرز پر کچھ علاقائی کشمیری پارٹیاں کچھ کچھ علیحدگی پسند خیالات کا اظہار کر رہی ہیں۔ الیکشن جیتنے کے بعد ہندوستانی آئین کا حلف لینے والے لوگ اقتدار سے ہٹنے کے بعد سستی سیاست کے لیے آئین کے دائرہ کار کے باہر جانے سے گریز نہیں کرتے۔ ڈاکٹر سنگھ نے علیحدگی پسندوں پر نشانہ لگاتے ہوئے کہا کہ وہ اصول پسندی کی نہیں، سہولت کی سیاست کرتے ہیں۔ کشمیر کا نوجوان سمجھنے لگا ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت میں ملک نے ترقی کی جو رفتار پکڑی ہے، اس میں کہیں وہ پیچھے نہ چھوٹ جائیں۔ کانگریس یہی سب دیکھ کر اپنے مستقبل کو پریشان کن اور بوجھل جان کر مایوس ہو رہی ہے۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر میں گزشتہ 70 سال میں کانگریس یا اس کی اتحادی جماعتوں کی حکومتیں رہی ہیں اور مسٹر غلام نبی آزاد کے وزیر اعلی رہتے ہوئے امرناتھ کی بڑی تحریک چلائی گئی تھی جس کے بعد مسٹر آزاد کو عہدہ چھوڑنا پڑا تھا۔

Title: jitendra singh hits out at opp for politicising army chiefs remark on kashmir | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply