سپریم کورٹ میں بابری مسجد ۔رام جنم بھومی کیس کی سماعت شروع، وکیلوں نے بڑی بنچ کا مطالبہ کیا

نئی دہلی:سپریم کورٹ نے اجودھیا میں بابری مسجد کے انہدام کی چوتھائی صدی پوری ہوجانے سے عین ایک روز قبل منگل سے رام جنم بھومی بابری مسجد تنازعہ پر حتمی سماعت شروع کر دی۔سپریم کورٹ کے چیف جسٹس دیپک مشرام جسٹس اشوک بھوشن اور جسٹس عبد النظیر پر مشتمل تین ججوں کی بنچ اجودھیا مندر تنازعہ میں 2010میں الہٰ آباد ہائی کورٹ کے فیصلہ کے خلاف کی گئی اپیل پر سماعت کر رہی ہے۔
سنی وقف بورڈ کی پیروی کرتے ہوئے سینیئر وکیل کپل سبل اور راجیو دھون نے کہا کہ چونکہ یہ کیس کوئی معمولی کیس نہیںہے اس لیے اس کیس کو پانچ یا سات ججی بنچ کو اس معاملہ کی سماعت کرنی چاہئے۔ کیس کی اہمیت جتاتے ہوئے سبل نے عدالت سے یہ بھی کہاکہ اس معاملہ پر 2019کے عام انتخابات کے بعد سماعت ہونی چاہئے۔
واضح رہے کہ اجودھیا کی متنازعہ زمین پر رام للا براجمان اورہندو مہا سبھا نے سپریم کورٹ میں رعذر داری دائر کی اور دوسری جانب سنی سینٹرل وقف بورڈ نے بھی ہائی کورٹ کے فیصلہ کےخلاف عرضی داخل کر دی۔اسکے بعد اس معاملہ میں کئی فریقوں نے عذر داریاں داخل کر دیں۔سپریم کورٹ نے 9مئی 2011کو اس معاملہ میںالہٰ آباد ہائی کورٹ کے فیصلہ پر حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے معاملہ کی سماعت کرنے کی بات کہی تھی۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Janmabhoomi babri masjid case lawyers demand larger bench in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply