سمرتی ایرانی نے مسلم یونیورسٹی کے سینٹروں کو غیر قانونی قرار دے کر فنڈ دینے سے انکار کر دیا

علی گڑھ : علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) کے وائس چانسلر لیفٹننٹ جنرل ریٹائرڈ ضمیر الدین شاہ نے کہا کہ مرکزی وزیر برائے فروغ انسانی وسائل سمرتی ایرانی نے کیرل کے وزیر اعلیٰ اومن چنڈی سے 9جنوری کو کہا تھا کہ کیرل، مغربی بنگال اور بہار میں اے ایم یو سینٹرزغیر قانونی طور پر قائم کیے گے ہیں اور ان کی وزارت انہیں کوئی فنڈ جاری نہیں کرے گی۔
ان خبروں کے بعد کہ ایرانی نے چنڈی کے ساتھ اپنے دفتر میں ہونے والی میٹنگ کے دوران وائس چانسلر کی بے عزتی کی تھی، اے ایم یو کے وی سی نے تنازعہ پر صفائی پیش کرتے ہوئے ایک بیان جاری کیا۔جس میں کہا گیا کہ 1971کی لونگے والا جنگ کے ایک بزرگ کو جس نے اپنی 40سالہ ملازمت کا ایک بڑا حصہ پنجاب اور شمال مشرقی ہند میں بغاوت کی سرکوبی اور مختلف فسادات میں فرقہ وارانہ جنون کو کم کرنے کی کوشش میںصرف کیا ہوا سے بے عزت کرنے کے لیے بڑا دل گردہ چاہئے۔
انہوں نے مزید کہا کہ اے ایم یو سے احساس محرومی کے شکار کچھ سابق طلبا نے وزارت فروغ انسانی وسائل کو یہ غلط تاثر دیا ہے کہ اے ایم یو کے یہ تمام سینٹر غیر قانونی ہیں۔انہوں نے کہا کہ وہ ا سہفتہ کے اواخر میں وزیر اعظم نریندر مودی سے ملاقات کریں گے اور یونیورسٹی کے حوالے سے تمام امور کا حل چاہیں گے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Irani said amu centres were illegal v c in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply