مختار عباس نقوی نے ہندوستان میں ثقافتی خیر سگالی کو سماجی ہم آہنگی کا پاس ورڈ بتایا

نئی دہلی:مرکزی وزیر مملکت برائے اقلیتی امور(آزادانہ چارج) مختار عباس نقوی نے یہاں کہا کہ ہندوستان میں ثقافتی خیر سگالی سماجی خیرسگالی کا ”پاس ورڈ“ ہے اس لئے بغیر ثقافتی خیرسگالی کے سماجی خیر سگالی ممکن نہیں ہوسکتی۔
”انڈیاہارمنی فاؤنڈیشن“ کے ایک پروگرام کو خطاب کرتے ہوئے مسٹر نقوی نے کہا کہ ہمارے ملک کی شاندار ثقافتی وراثت کو محض سجا کر رکھنے سے کام نہیں چلے گا بلکہ اسے سنوارنے اور نئی نسل کو ان کی موجودہ سوچ سمجھ کے ساتھ اس سے واقف کرانے کی ضرورت ہے۔ مسٹر نقوی نے کہا کہ ہمارا ملک مختلف زبانوں ، مذاہب، علاقوں، ثقافتوں اور روایتوں کے باوجود جس طرح ایک دھاگے میں بندھا ہوا ہے اس کی اہم وجہ ”ثقافتی خیر سگالی“ ہے جو ہندوستان کو ”کثرت میں وحدت“ کی ثقافتی رشتوں میں مربوط رکھتا ہے۔
اسی کثرت میں وحدت کو ہم ثقافتی وطن پرستی کہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان میں سیکڑوں زبانیں مذہبی عقائد ،29 ریاستوں اور مرکز کے زیر کنٹرول سات علاقوں کے مختلف رہن سہن، کھانے پینے کے مختلف انداز اور مختلف وضع قطع کے باوجود ہم ایک دھاگے میں بندھے ہوئے ہیں جس کی واحد وجہ ہماری ”ثقافتی خیر سگالی“اور ”ثقافتی قوم پرستی“ ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Indias cultural harmony is the password of communal harmonynaqvi in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply