ہندوستان کی کوششوں سے کیتھولک پادری یمنی اغوا کاروں کے چنگل سے آزاد

نئی دہلی :(یو این آئی)” اچھائی سب میں ہے اگر نہیں ہوتی تو یمنی انتہاپسندوں کے اٹھارہ ماہی قبضے سے آزاد ہوکر آج میں یہاں نہیں ہوتا“۔اس استدلال کے ساتھ آج کیتھولک فادر ٹام اوزنالل نے حکومت ہند اور ان تمام اداروں اور انفرادی لوگوں کا شکریہ ادا کیا جن کی کوششیں با رآور ہوئیں اور دعائیں قبول ہوئیں۔ 59سالہ فادر ٹام اوزنالل کو یمن میں 2016 میں 5 مارچ کو اس وقت اغوا کر لیا گیا تھا جب وہ عبادت میں مصروف تھے۔
اپنا تجربہ بیان کر تے ہوئے فادر نے کہا کہ انہیں اغوا کا رآنکھوں پر پٹی باندھ کر ایک جگہ سے دوسری جگہ منتقل تو کرتے رہے لیکن کبھی کوئی گزند نہیں پہنچایا۔ البتہ ذیابیطس کی دوا کا نظم کرتے رہے۔
یہ پوچھے جانے پر انتہائی سفاک لوگ جن میں بیشتر کی قیادت داعش کے ہاتھ میں ہے، ان کے ساتھ اس طرح کیوں پیش آ ئے فادر نے برجستہ کہا کہ ” اچھائی سب میں ہے اور اگرایسا نہیں ہوتا تو یمنی انتہاپسندوں کے اٹھارہ ماہی قبضے سے آزاد ہوکر آج میں یہاں نہیں ہوتا“انہوں نے کہا کہ وہ اس بات پر کامل یقین رکھتے ہی کہ خدا کے حکم کے بغیر کچھ نہیں ہوتا۔فادر نے اس موقع پر ان اغوا کاروں کے لئے بھی ہدایت کی دعا کی جن کی وجہ سے انہیں انتہائی غیر یقینی صورتحال کا سامنا کرنا پڑا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Indian priest kidnapped in yemen returns home in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News
Tags: , ,

Leave a Reply