اگر اندرا گاندھی پاکستان کے دو ٹکڑے کر سکتی ہیں تو موجودہ حکومت پانچ ٹکڑے کرے

نئی دہلی: وشو ہندو پریشد ( وی ایچ پی)کے بین االاقوامی صدر پروین توگڑیا نے کہا ہے کہ وادی کشمیر میں تشدد برپا کرنے والوں سے نمٹنے کے لیے فوج کو کھلی چھوٹ دی جانی چاہیے۔
چنڈی گڑھ میں وی ایچ پی کے کارکنوںسے اپنے خطاب میں توگڑیا نے 1971کی جنگ کا ذکر کرتے ہوئے اس وقت کی کانگریس وزیر اعظم اندرا گاندھی کی نڈر اور بے خوف قیادت کی تعریف کی ۔ انہوں نے کہاکہ اب پاکستان کے خلاف جنگ چھیڑنے کا وقت آن پہنچا ہے ۔
اگر اندرا گاندھی پاکستان کے دو ٹکڑے کر سکتی ہیں اور 90ہزار پاکستانی قیدیوں کو جنگی قیدی بنا سکتی ہیں تو اب وقت کا تقاضہ ہے کہ پاکستان کے پانچ ٹکڑے کر دیے جائیں اور ایک لاکھ پاکستانیوںکو گرفتار کیا جائے۔
کشمیر اسمبلی میں نیشنل کانفرنس کے سینیئر ممبر اسمبلی کے ذریعہ پاکستان حامی نعرے لگانے پرتبصرہ کیے جانے کوجب کہا گیا توانہوںنے کہا کہ اسے گرفتار کیا جانا چاہیے اور عدالت اسے پھانسی کی سزا سنائے تاکہ آئندہ کوئی اس ملک میں پاکستان حامی نعرے بلندکرنے کی ہمت نہ کرے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ محبوبہ حکومت کو بھی برطرف کیا جائے کیونکہ اس نے ہمارے فوجیوںکے خلاف ایف آئی آر کرائی ہے۔

Title: if indira gandhi could bifurcate pakistan into two then | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply