میرا داعش کے البغدادی سے کوئی تعلق نہیں: حیدرآبادی نوجوان

حیدرآباد: داعش سے مبینہ تعلقات کے شبہ میں این آئی اے کی جانب سے گذشتہ روز پرانے شہر حیدرآباد سے حراست میں لئے گئے 11مشتبہ نوجوانو ں میں سے ایک نوجوان عبدالقادر کو چھوڑدیا گیاجبکہ ان کے چھوٹے بھائی حبیب محمد کی ابھی رہائی نہیں ہوئی ہے۔
جن 11نوجوانوں کو حراست میں لیا گیا تھا ان میں یہ دونوں بھائی بھی شامل ہیں۔ ان کو رہا کرنے کے بعد ان کی غم زدہ ماں نے روتے ہوئے اپنے بیٹے کے ساتھ میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ان کے ایک بیٹے کی انکوائری مکمل ہوگئی ہے۔
اس کے بعد انہیں چھوڑدیا گیا۔ انہیں ہندوستان کے قانون پر پورا بھروسہ ہے کہ ان کے دوسرے بیٹے کو بھی جلد چھوڑدیا جائے گا۔ انہو ں نے دعویٰ کیا کہ ان کے دونوں بیٹے بے قصور ہیں اور انہوں نے کوئی جرم نہیں کیا اور آج تک کوئی ملک مخالف حرکت نہیں کی۔
انہوں نے کہا کہ ان کے بچوں پر بھی انہیں بھروسہ ہے۔ میڈیا سے بات کرتے ہوئے رہا کئے گئے عبدالقادر نے کہا کہ ان کے چھوٹے بھائی کا نام حبیب محمد ہے۔ انہیں امید ہے کہ این آئی اے کی ٹیم پوچھ تاچھ کے بعد ان کے چھوٹے بھائی کو بھی چھوڑدے گی۔
انہو ں نے بھی کہا کہ ملک کے قانون پر انہیں بھروسہ ہے۔ انہوں نے این آئی اے کی پوچھ تاچھ کے بارے میں تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ داعش سے مبینہ تعلقات اور دیگر امور پر ان سے پوچھ تاچھ کی گئی۔ عبدالقادر نے کہا کہ ان کا خاندانی نام البغدادی ہے۔ اس سے میڈیا کو غلط فہمی ہوئی اور این آئی اے نے ان کے بھائی کے ساتھ انہیں بھی حراست میں لیا تھا۔
انہو ں نے کہا کہ داعش کا سربراہ بھی البغدادی ہے۔ اس لئے ان کے نام پر شک پیدا ہوگیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ داعش کے البغدادی سے ا ن کے کوئی تعلقات نہیں ہیں اور اس بات کو ثابت کیا گیا کہ البغدادی ان کا خاندانی نام ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان کے بھائی کی جانچ چل رہی ہے اور انہیں امید ہے کہ ان کے بھائی کو بھی جلد چھوڑدیا جائے گا۔ (یواین آئی )

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: I have no connection with albaghdadi or isissays hyderabadi youth in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply