اترپردیش کے پرتاپ گڑھ میں جہیزی موت معاملہ میں شوہرو ساس سسر کو دس سال قید

پرتاپ گڑھ : اتر پردیش میں پرتاپ گڑھ ضلع ایڈیشنل سیشن جج سویس پرکاش شریواستوکی عدالت نے جہیزاور قتل کے مقدمہ کی سماعت کرتے ہوئے ملزم شوہر ، ساس و سسر کو خاطی ثابت کرتے ہوئے دس سال قید و جرمانہ کی سزا سنائی ہے۔ استغاثہ کے مطابق مدعی لال جی نے شکایت درج کی کہ اسکی بیٹی کنک کی شادی 6/ جون 2010 کو ابھشیک کے ساتھ ہوئی تھی۔ جہیز میں ڈیڑھ لاکھ روپے نقد او رسونے کی چین کا مطالبہ کرکے اسکی بیٹی کو اس کے شوہر ، ساس اور سسر اذیتیں دیتے تھے، جسکی شکایت اس نے درج کرائی تھی۔کنک مائیکے میں رہنے لگی تھی ۔
لال نے بتایا کہ یکم نومبر 2104کو ان کا داماد ابھشیک کنک کو ملازمت دلانے کے بہانے سسرال لے آیا تھا۔ لیکن 16/ نومبر 2014 کو اطلاع ملی کہ کنک نے پھانسی لگا لی ہے۔ بعد میں معلوم ہوا کہ جہیز کا مطالبہ پورا نہ کرنے پر اسکی بٹی کا قتل کر دیا گیا۔ پولیس نے جہیز اور قتل کا کیس درج کر کے ان تینوں کے خلاف مقدمہ درج کردیا۔ عدالت نے مقدمہ کی سماعت کرتے ہوئے وکلا کے دلائل سننے کے بعد شواہد کی بنیاد پر مجرم قرار دیتے ہوئے ملزم شوہر ، ساس او رسسر کو دس دس سال قید و دس دس ہزار روپیہ جرمانہ کی سزا سنائی۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Husband father and mother ilaws get 10 year jail in dowry death case in pratapgarh in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply