قومی انسانی حقوق کمیشن نے بھوپال انکاؤنٹرپر حکومت مدھیہ پردیش کو نوٹس جاری کر دیا

نئی دہلی:قومی انسانی حقوق کمیشن نے مدھیہ پردیش میں پولس انکاؤنٹر میں اسٹوڈنٹس اسلامک موومنٹ آف انڈیا( سیمی) کے8کارکنوں کی ہلاکت کے حوالے سے صوبائی حکومت اور متعلقہ حکام کو نوٹس جاری کرکے چھ ہفتے میں رپورٹ طلب کر لی۔
کمیشن نے تصادم کے واقعہ کا از خود نوٹس لیتے ہوئے ریاست کے چیف سکریٹری، پولیس کے ڈائریکٹر جنرل اور انسپکٹر جنرل (جیل) اور ریاستی حکومت کو نوٹس جاری کئے اور ان سے اس واقعہ کے بارے میں تفصیلی رپورٹ دینے کو کہا۔ اس نے ایک بیان میں کہا کہ وہ پولیس، عدالتی حراست اور پولیس کارروائی میں ہونے والی اموات کے بارے میں ہمیشہ فکر مند رہا ہے اور اس نے خاص ہدایات جاری کئے ہیں جو تصادم کے معاملات میں تعمیل کے لئے ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں کو بھیجے گئے ہیں۔
کمیشن نے کہا کہ اس نے پولیس رپورٹ دیکھی ہیں، جن میں کہا گیا ہے کہ زیر سماعت قیدی ایک سیکورٹی گارڈ کو قتل کرنے کے بعد بھوپال کی سنٹرل جیل سے بھاگے تھے۔ ان میں سے تین قیدی تین سال پہلے کھنڈوا جیل سے بھی بھاگے تھے اور اس سال اڑیسہ میں انہیں دوبارہ گرفتار کر لیا گیا تھا۔ اس کے بعد ان پر قتل، جیل فراری اور بینک ڈکیتی سمیت مختلف جرائم کے الزام لگائے گئے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Human rights commision issue notice to madhya pardesh govt over bhopal encounter in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply