اپنے ہی ملک میں ہندوؤں کا نقل مکانی کرنا تشویشناک :آر ایس ایس سربراہ

جودھپور:اتر پردیش کے شہر کیرانہ میں ہندوؤں کے مبینہ نقل مکانی کرجانے کے حوالے سے جاری تنازعہ کے درمیان آر ایس ایس سربراہ موہن بھاگوت نے کہا ہے کہ جرائم پیشہ مسلمانوں کے خوف سے ہندوؤں کے نقل مکانی کرنے کے معاملات کافی تکلیف دہ اور پریشان کن و تشویشناک ہیں۔ اور ان لوگوں کے دل سے خوف و ہراس اور مایوسی دور کرنا چاہئے ۔
انہوں نے مزید کہا کہ ہندوو¿ں کی نقل مکانی روکنا حکومت کی ذمہ داری ہے۔ہم پر یہ ذمہ داری بھی عائد ہوتی ہے کہ ہم نقل مکانی کرنے والے لوگوں کے دل سے مایوسی دور کر کے ان میں یہ احساس پیدا کریں کہ یہ ملک ہمارا ہے اوریہ زمین ہماری ہے۔
بھاگوت نے یہ بات گذشتہ شام جودھپور میںودیا مندر میں ہندو سامراج دوس کے عنوان سے مراٹھا پیشوا چھترپتی شیواجی کی یاد میں منائے جانے والے ایک پروگرام کے موقع پر میں کہی۔
انہوں نے کہا کہ شیواجی کے دور میں بھی ایسی ہی صورت حال تھی لیکن انہوں نے ہندوو¿ں کو متحد کیا اور ان میں قومیت اور قربانی کی روح پھونکی ۔بھاگوت نے کہا کہ شیواجی کے نقش قدم چلنا وقت کا اہم تقاضہ ہے اور آر ایس ایس اس پر عمل پیرا ہے۔
یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ سنتوں کی ایک پانچ رکنی وفد نے کیرانہ کا دورہ کرنے کے بعد جو حقائق و شواہد پیش کیے ہیں ان سے ثابت ہوجاتا ہے علاقہ سے ہندوو¿ں کی نقل مکانی کا بی جے پی کو دعویٰ بے بنیاد اور جھوٹا ہے۔

Title: hindus unsafe in india bhagwat | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply