پاکستانی و بنگلہ دیشی ہندوؤں کو ہندوستانی شہریت دی جائے گی،نیا قانون عنقریب

 نئی دہلی: پاکستان و بنگلہ دیش سے نقل مکانی کر کے ہندوستان آنے والے ہندوؤں کو قبول کرنے کے حوالے سے وزارت داخلہ قانون شہریت میں ترمیمات تجویز کرنے کا ارادہ کر رہی ہے۔
اگر یہ ترمیمات ہو جاتی ہیں تو ان دونوں ملکوں کے ہندوؤں کو، جو وہاں ستائے جانے اور مذہبی تشدد سے خوف زدہ ہو کر ہندوستان آچکے ہیں، غیر قانونی تارکین وطن قرار نہیں دیا جائے گا۔قانون شہریت مجریہ 1955 کی رو سے ان ہندوپناہ گزینوں کو ہندوستان میں رہنے کا قانونی جواز حاصل ہو جائے گا اور حتیٰ کہ وہ شہریت کے بھی مستحق ہو جائیں گے۔
اگر ایسا ہو جاتا ہے تو پاکستان اور بنگلہ دیش کے ان دو لاکھ ہندوو¿ں کو فائدہ ہو گا جن سے ان ممالک میں دوسرے درجہ کے شہری جیسا سلوک کیا جاتا ہے اور آئے روز فرقہ وارانہ تشدد کا شکار ہوتے رہتے ہیں۔
یہی نہیں بلکہ اکثر وبیشتر انہیں توہین رسالت قوانین کا مجرم قرار دیا جاتا ہے۔واضح رہے کہ بی جے پی نے 2014کے پارلیمانی انتخابات میں اپنے انتخابی منشور میں ہندو پناہ گزینوں کو شہریت دینے کا وعدہ کیا تھا۔
اور جب سے مودی حکومت بر سر اقتدار آئی ہے ہندو پناہ گزنیوں کو طویل میعاد ی ویزا، تا وقتیکہ انہیں شہریت نہ مل جائے، جاری کرنے کے کئی اقدامات کیے جا چکے ہیں۔

Title: hindus from pakistan bangladesh will get to claim indian citizenship | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply