حج کا مقصد مسلمانوں کی عالمی اجتماعیت اور تربیت ہے او رہر شعبے میں اس کا مظاہرہ ہونا چاہئے۔ مولانا عرفی قاسمی

نئی دہلی:مسلم پولٹیکل کونسل کے صدر ڈاکٹر تسلیم رحمانی نے ایک طرف جہاں حج کے تعلق سے سعودی عرب کے ایران پر عائد شرائط کو غلط قرار دیا وہیں انہوں نے ایران کے حج کے بائیکاٹ کے اعلان کو بھی غلط قراردیا۔ یہ بات انہوں نے آ ل انڈیا متحدہ ملی محاذ کے زیراہتمام حج کانفرنس میں کہی۔ انہوں نے کہاکہ یہ ایسا مسئلہ نہیں تھا جس کو حل نہ کیا جائے اور دونوں ملکوں کو انا کا مسئلہ نہیں بنانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ کسی کو یہ حق نہیں ہے کہ حج جیسے مقدس فریضے سے کسی کو محروم کرے یا کوئی اس کا بائیکاٹ کرے۔ انہوں نے کہاکہ کعبہ بیت اللہ ہے اس کا کوئی مالک نہیں ہے اور نہ ہی کوئی کسی کو روک سکتا ہے۔
انہوں نے مسلم ممالک کے رویے پرسخت تنقید کرتے ہوئے کہا سعودی عرب کے بھی دوست ممالک ہیں اور ایران کے بھی دوست ممالک ہیں تو ان ممالک نے دونوں کے درمیان مصالحت کیوں نہیں کرائی۔ اگر ان ممالک نے اس سمت میں کوشش کی ہوتی آج یہ نوبت نہیں آتی۔ انہوں نے حج کے انتظامات کو بہتر ڈھنگ سے کرنے کے لئے مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ مختلف ممالک کے ماہرین پر مشتمل ایک مشاورت کمیٹی بنائی جائے جو بہتر انتظامات اور حادثہ سے پاک حج نظام کو ترتیب دے سکیں۔ آل انڈیا تنظیم علمائے حق کے قومی صدر مولانا اعجاز عرفی قاسمی نے کلیدی خطبہ پیش کرتے ہوئے کہا کہ کسی بھی عبادت کو آپسی اختلافات کا شکار نہیں بنایا جانا چاہئے۔کیوں کہ اس سے اسلام کا اور اسلام کے نظام کا نقصا ہوتا ہے۔ انہوں نے حج پر تفصیل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حج محض عبادت بدنی اور مالی کا نام نہیں ہے بلکہ وہ ایسا نظام ہے جس کے ذریعہ امت مسلمہ کو مسلمانوں کے سکھ دکھ جاننے کا موقع ملتا ہے۔
انہوں نے کہا کہ حج صرف طواف کعبہ کا نام نہیں بلکہ عالمی طور پر مخصوص لباس میں اجتماعی تربیت کا نام ہے اور مسلمانوں کو ہر شعبے میں اس کا مظاہرہ کرنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ خانہ کعبہ وہ عمارت ہے جس کے سامنے دنیا کی ساری عمارت ہیچ ہے اور دنیا کا ہر شخص خواہ عام آدمی یا بادشاہ ہو حکمراں وہ اس کی زیارت کرنے کی حسرت دل میں ہمیشہ رکھتا ہے اور زندگی میں کم از کم ایک بار ضرورت اس کی زیارت کرنا چاہتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ مسلمانوں کو حج کرنے سے قبل حج کے مقاصد پر غور کرنا چاہئے اور یہ جاننا اور سمجھنا چاہئے کہ آخر حج کا حکم کیوں دیا گیا ہے۔ انہوں نے حج کو ایک رسم کی شکل لینے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حج کرنے سے پہلے اپنے حقوق’ پڑوسی کے حقوق’ ناداراور غرباکے حقوق پر توجہ دینی چاہئے اور حج کرنے کے بعد اگر حج کے اثرات ججاج پر مرتب نہیں ہوتے تو اس کے بارے میں بھی غور کرنا چاہئے۔
شاہ ولی اللہ انسٹی ٹیوٹ کے چیرمین مولانا عطا الرحمان قاسمی نے اجتماعیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اسلام میں اس پہلو پر زور دیا گیا ہے اس لئے جمعہ’ عیدین اور حج کا نظام قائم کیاگیا ہے تاکہ مسلمانوں نہ صرف ایک دوسرے سے متعارف ہوسکیں بلکہ ان کے حالات اور مسائل سے بھی آگاہ ہوسکیں۔انہوں نے کہاکہ حج کے ذریعہ مسلمانوں کو ایک ڈور میں باندھنے کا نظم کیا گیا ہے لیکن افسوس کی بات ہے مسلمانوں تو بڑی تعداد میں حج کرتے ہیں لیکن حج کے مقاصد نہیں سمجھ پاتے۔شیعہ عالم دین مولانا سید محسن تقی نے حج کے سوسالہ دور کو دیکھیں تو حج کا مقصد فوت نظر آتا ہے۔ حجاج کی تعداد میں اضافہ نظر آتا ہے اور پوری دنیا سے مسلمان جوق درجوق وہاں جاتے ہیں لیکن ان میں اجتماعیت اور اتحاد کہیں نظر نہیں آیا جس کی وجہ سے مسلمانوں کی پوری دنیا میں کوئی حیثیت نہیں رہ گئی۔
انہوں نے دعوی کیا کہ ” شیعہ سنی کے درمیان تفرقہ ڈال کرسلطنت عثمانیہ کو ایک سازش تحت ختم کیا گیا تاکہ اسرائیل نام کی ایک ریاست کو وجود میں لایا جاسکے۔ یہ سلطنت عثمانیہ کے خاتمے سے ہی ممکن تھا۔ انہوں نے کہا کہ صورت حال یہ ہے کہ مسلم ممالک میں کتنا بڑا بھی دھماکہ ہوجائے اور کتنے بھی مسلمان ہلاک ہوجائیں دنیا میں کوئی فرق نہیں پڑتا جب کہ یوروپ ممالک میں دھماکہ ہوجاتا ہے تو پوری دنیا ہل جاتی ہے۔ انہوں نے شیعہ سنی اختلاف سے گریز کرنے اور اسے ہوا دینے کی مخالفت کرتے ہوئے کہاکہ جو لوگ سمجھتے ہیں اس سے شیعہ یا سنی کا نقصان ہوتا ہے وہ بہت بڑی غلط فہمی میں بلکہ اس سے صرف اور صرف اسلام کا نقصان ہوتا ہے اور اس کا راست فائدہ اسلام دشمن طاقتوں کو پہنچتا ہے۔
شیعہ جامع مسجد کے امام مولانا ڈاکٹر حسن زیدی نے ایک سازش کے تحت مسلمانوں کو دہشت گرد’ بدعنوان اور جرائم ملوث قردیا گیا ہے تاکہ اسلام کو دہشت کا مذہب ثابت کیا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ ہر عبادت کا ایک مقصد ہوتا ہے اور اگر عبادت کا مقصد اور عبادت کے اثرات معاشرے پر نظر نہ آئیں تو ایسی عبادت کس کام کی۔ اس کے علاوہ مقررین میں مولانا عامر اقبال ندوی،مولاناجاوید عالم قاسمی، مفتی یوسف قاسمی وغیرہ شامل تھے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Hajj a spiritual gathering is like nothing else on earth in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply