یکساں سول کوڈ کے نفاذ کی کوششوں سے ملک میں یکجہتی و ہم آہنگی کا ماحول خراب ہوگا:مسلم مجلس مشاورت

کلکتہ:آل انڈیا مسلم مجلس مشاورت کی قومی مجلس عاملہ نے آج یکساں سول کوڈ کے نفاذ کی کوششوں پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ یکساں سول کوڈ کا نفاذ ملک کے آئین کے خلاف ہے اور اس سے ملک میں یکجہتی و ہم آہنگی کے ماحول کو شدید نقصان پہنچنے گا اور اس کی وجہ سے ملک کی ایک بڑی تعداد جس میں مسلم، عیسائی، سکھ اور دیگر مذہبی و لسانی اقلیتیں شامل ہیں خود کو غیر محفوظ تصور کررہی ہے۔
کلکتہ میں منعقد مجلس عاملہ کی میٹنگ جس میں ملک بھر مشاورت کے 50سے زائد ارکان نے شرکت کی کئی اہم امور پر غور و خوض کیا۔ لاکمیشن کے ذریعہ یکساں سول کوڈ پر مسودہ تیاری کیے جانے اور مختلف طبقات سے بات چیت کیے جانے پر تفصیل سے جائزہ لیا گیا۔مشاورت کی مجلس عاملہ کی ممبر عظمیٰ ناہید نے کہا کہ تین طلاق اور تعدد ازدواج کے حوالے سے مسلم پرسنل لا میں مداخلت اور یکساں سول کوڈ کا مسئلہ اٹھتا ہے۔
اس لیے ضرورت ہے کہ تین طلاق پر مسلم پرسنل لا بورڈ فقہا کرام کے سیمینار کا انعقاد کرکے اتفاق رائے کوئی حل نکالے تاکہ اس کے بہانے کسی کو مداخلت کرنے کا موقع نہیں ملے۔
کئی اراکین نے یکساں سول کوڈ کی مخالفت میں ماحول سازگار کرنے کیلئے ملک کی دیگر اقلیتوں کے ساتھ بات چیت کرنے اور ان میں بیدار ی لانے کیلئے کوشش کی جائے تاکہ اس کی مخالفت رائے عامہ ہموار ہو۔(یو این آئی)

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Government pitches for uniform civil code muslim majlis mushawarat express concern in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply