حکومت نے ہم جنس پرستی کا معاملہ سپریم کورٹ کی صوابدید پر چھوڑ دیا

نئی دہلی:سپریم کورٹ میں یہ طے کرنے کے لیے سماعت چل رہی ہے کہ ہم جنس پرستی ایک جرم ہے یا نہیں۔بدھ کو سالسٹر جنرل تشار مہتہ نے آئینی بنچ سے کہا کہ حکومت کا ہم جنس پرستی کے حوالے سے کوئی موقف نہیں ہے اوردفعہ 377کی آئینی حیثیت کا معاملہ عدالت پر چھوڑتی ہے۔لہٰذاسپریم کورٹ اس معاملہ پر اپنا فیصلہ سنائے کہ آیا ہم جنس پرستی قانوناً جائز ہے ۔

واضح ہو کہ ہم جنس پرستی کو جرم کے زمرے سے ہٹانے سے متعلق عرضیوں پرچیف جسٹس دیپک مشراکی سربراہی والی پانچ ججی آئینی بنچ جس کے دیگر ججزجسٹس آر ایف نریمن ،جسٹس اے ایم کھانولکر،جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ اور جسٹس اندوملہوترہ ہیں،سماعت کررہی ہے۔

Title: government leaves it to scs wisdom to decriminalize gay sex in Urdu | In Category: ہندوستان  ( india ) Urdu News

Leave a Reply