فوجی سربراہ کاترقی روکنے کی کوشش کرنے کا اپنے پیشرو پر الزام

نئی دہلی:فوجی سربراہ جنرل دلبیر سنگھ نے سابق فوجی سربراہ اور نریندر مودی کی حکومت میں وزیر مملکت خارجہ ریٹائرڈ جنرل وی کے سنگھ پر سنگین الزامات لگائے ہیں۔جنرل دلبیر نے سپریم کورٹ میں دائرکردہ ایک حلف نامہ میں سابق فوجی سربراہ پر الزام لگایا ہے کہ انہوں نے بد نیتی اور غیر فوجی اسباب سے من مانے طور پر انہیں بے قصور سزا دینے کیلئے ان کی ترقی روکنے کی کوشش کی تھی۔
سپریم کورٹ میں بدھ کے روز دائر کئے گئے اس حلف نامہ میں جنرل دلبیر سنگھ نے کہا ہے کہ 2012 میں اس وقت کے جنرل وی کے سنگھ نے انہیں پریشان کیا کہ وہ فوجی کمانڈر نہ بن سکیں۔ جنرل سہاگ نے یہ بھی کہا کہ وزارت دفاع کی تحقیقات سے بھی یہ صاف ہو چکا ہے کہ جنرل ریٹائرڈ وی کے سنگھ نے ان پر جو الزامات عائد کیے تھے وہ بے بنیاد تھے۔جنرل دلبیر سنگھ نے یہ حلف نامہ فوجی سربراہ کے طور پر ان کے تقرر کے خلاف لیفٹننٹ جنرل روی دستانے کی جانب سے سپریم کورٹ میں دائر عرضی کی سماعت کے دوران داخل کیاہے۔
لیفٹننٹ جنرل دستانے نے اپنی عرضی میں کہا ہے کہ ان کے ساتھ تفریق کرکے جنرل دلبیر سنگھ کو فوجی سربراہ بنایا گیا ہے۔ واضح رہے کہ جنرل دلبیر سہاگ یکم اگست2014سے نئے فوجی سربراہ کے طور پر ملک کی خدمات انجام دے رہے ہیں۔جنرل وی کے سنگھ نے فوجی سربراہ کے طور پر 2012 میں فوج کی 3 کور کے جنرل آفیسر ان کمانڈ دلبیر سنگھ پر اپنی خفیہ یونٹ پر کمان اور کنٹرول رکھنے میں ناکام رہنے کیلئے ’ڈسپلن اور چوکسی پابندی‘ لگا دی تھی۔ یہ پابندی آسام کے جورہاٹ میں ایک آپریشن کے سلسلے میں تشکیل کردہ بورڈ آف انکوائری کے بعد لگائی گئی تھی۔
جنرل وی کے سنگھ کے بعد فوجی سربراہ بننے والے جنرل وکرم سنگھ نے عہدہ سنبھالنے کے بعد یہ پابندی ہٹا دی اور انہیں مشرقی فوج کا کمانڈر مقرر کیا۔ جنرل وکرم سنگھ کے ریٹائر ہونے کے بعد جنرل دلبیر سنگھ کو فوجی سربراہ بنایا گیا تھا۔ لیکن لیفٹننٹ جنرل دستانے نے اسے امتیازی سلوک قرار دیتے ہوئے عرضی داخل کر کے اس ترقی کو چیلنج کیا تھا۔ جنرل دلبیر سنگھ نے حلف نامہ میں کہا ہے کہ جس وقت 3 کور نے جورہاٹ میں آپریشن چلایا تھا اس وقت وہ چھٹی پر تھے اور ان پر کسی اور سبب سے پابندی لگائی گئی تھی۔ کورٹ آف انکوائری میں بھی ان کے خلاف کچھ ثابت نہیں ہوا تھا۔
انہوں نے کہاکہ وہ خود شکار رہے ہیں اس لئے ان پر عائد کردہ پابندی کی بنیاد پر ان کی تقرری کو چیلنج نہیں کیا جاسکتا۔ وزارت داخلہ نے بھی یہ بات تسلیم کی ہے کہ ان کے ساتھ ناانصافی ہوئی تھی اور انہیں جاری کیا گیا اظہار وجوہ نوٹس نامناسب تھا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Gen v k singh victimised me army chief tells sc in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply