ہندوستان نے دفعہ370 ختم کرنے کے معاملہ پر چین کو خاموش کر دیا

نئی دہلی : جموں و کشمیر کو خصوصی درجہ دینے والی دفعہ370کو ختم کرنے اور ریاست کو دو مرکزی علاقوں میں تقسیم کرنے کے ہندوستان کے تاریخی فیصلہ پر ہندوستان نے چین کو ایک ٹھوس جواب دے کر اس وقت خاموشی اختیار کرنے پر مجبور کر دیا جب وزیر خارجہ ایس جے شنکر نے اپنے دورہ چین کے دوران دوشنبہ کو اپنے چینی ہم منصب وانگ لی سے تبادلہ خیال کرتے ہوئے دفعہ370ختم کرنے کا معاملہ آنے پر صاف صاف کہہ دیا کہ ہندوستان نے جموں و کشمیر کے حو الے سے جو فیصلہ لیا ہے وہ اس نے اپنے آئین کے تحت لیا ہے نیز اس سے پاکستان یا چین کی سرحد پر کوئی اثر نہیں پڑتا۔واضح ہو کہ چین نے جموں و کشمیر اور لداخ کو مرکز کا زیر انتظام علاقہ قرار دینے کے فیصلے پرسوال کھڑے کیے تھے اور کہا تھا کہ اس سے اس کی علاقائی یکجہتی متاثر ہو سکتی ہے۔لیکن مشترکہ پریس کانفرنس میں جے شنکر نے کہا کہ مذاکرات کے دوران اکسائی چن کا مسئلہ بھی اٹھایا گیا۔چین کو اس امر کی تشویش تھی کہ ہندوستان کے اس فیصلہ سے ہند چین سرحد پر منفی اثرات مرتب ہو سکتے ہیں ۔لیکن انہوں نے واضح کیا کہ ہندوستان کا فیصلہ بین الاقوامی سرحد پر کوئی اثر نہیں ڈالے گا۔جے شنکر نے اپنے تین روزہ دورے کے دوران چین کے نائب صدر وانگ کیشان سے بھی ملاقات کی۔یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ جموں و کشمیر سے متعلق فیصلے کے فوراً بعد پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی بھی چین گئے تھے جہاں انہوں نے جب چین کی اس جانب توجہ دلائی تو چین نے کہا تھاس کہ اسے امید ہے کہ اس فیصلہ خطہ کا سکون غارت نہیں ہوگا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Future of india china ties depends on mutual sensitivity toeach others core concerns s jaishankar in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.