چھتیس گڑھ میں سلامتی دستوں کے ساتھ خونریز تصادم میں15نکسلی ہلاک

رائے پور:چھتیس گڑھ کے سکماضلع کے نزدیک کونٹا اور گولاپلی کے درمیان گھنے جنگلات میں سلامتی دستوں کے ساتھ جھڑپ میں کم ازکم 15نکسلی ہلاک ہوگئے۔

ریاست کے اسپیشل ڈائریکٹر جنرل آف پولس (نکسل مخالف آپریشنز ) ڈی ایم اوستھی نے بتایا کہ چھتیس گڑھ کی تاریخ میں نکسلیوں کے خلاف یہ سب سے بڑی کارروائیوں میں سے ایک ہے جس میں 15لاشیں پائی گئیں۔

ایک عورت سمیت دو نکسلی زخمی ہو گئے جنہیں گرفتار کر لیا گیا ۔پولیس سپرنٹنڈنٹ ابھیشیک مینا نے کہاکہ جنوبی سکما میں نکسلیوں کے کیمپوں کے مقامات کے بارے میں خفیہ اطلاع موصول ہونے پر پیر کی صبح اسپیشل ٹاسک فورس (ایس ٹی ایف) اور ڈی آر جی کے 200اہلکارجنگل میں مختلف سمتوں سے داخل ہوکر تلاشی مہم چلارہے تھے کہ ان کو ماؤ پرستوں کا ایک کیمپ نظر آگیا۔ ابھی وہ اس کا محاصرہ کرنے کی حکمت عملی وضع کر ہی رہے تھے کہ ماؤ پرستوںنے ان پر فائرنگ شروع کر دی۔

سلامتی دستوں نے بھی جوابی فائرنگ کی اور ایک گھنٹے تک مقابلہ کرنے کے بعد ماؤ باغی بھاگ کھڑے ہوئے ۔پولیس کو موقع سے 15لاشیں اور چارآئی ای ڈی اور 16 رائفلیں ملی ہیں۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: fifteen naxals killed in encounter with police in chhattisgarh in Urdu | In Category: ہندوستان  ( india ) Urdu News

Leave a Reply