اب توجی چاہتا ہے لوک سبھا سے استعفیٰ ہی دے دوں: اڈوانی

نئی دہلی:لوک سبھا میں سرمائی اجلاس کے آغاز سے ہی نوٹ بند کرنے کے معاملہ پر بحث کرانے کے لئے جاری ہنگامہ کے باعث کوئی کام کاج نہ ہونے سے بی جے پی کے دل برداشتہ سینئر لیڈر لال کرشن اڈوانی نے آج نہایت مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ایوان کی صورت حال دیکھ کر ان کا دل چاہتا ہے کہ لوک سبھا سے مستعفی ہو جانا چاہئے۔
نوٹ بند کیے جانے پر زبردست ہنگامہ کی وجہ سے ایوان کی کارروائی دن بھر کے لئے ملتوی ہونے کے بعد بھی مسٹر اڈوانی سیٹ پر بیٹھے رہے۔ انہوں نے وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کو اپنے پاس آنے کا اشارہ کیا۔ اس دوران ریلوے کے وزیر مملکت منوج سنہا، شہری ہوابازی کے وزیر مملکت جینت سنہا بھی ان کے پاس آکر کھڑے ہوگئے۔انہوں نے مسٹر سنگھ سے کہا کہ ایوان کی کارروائی کم سے کم ایک دن تو چلنی ہی چاہئے۔ اسپیکر کو میری طرف سے بتا دیجئے کہ ایوان ایک دن ہی سہی ضرور چلنا چاہئے۔
اسی دوران ترنمول کانگریس کے ادریس علی ، بی جے پی کے نانا پوٹلے اور کچھ دیگر اراکین مسٹر اڈوانی کی سیٹ کے پاس پہنچ گئے۔ مسٹر ادریس نے بی جے پی لیڈرکے بغل میں بیٹھ کر ان سے ایوان میں ہوئے ہنگامے کے سلسلے میں بات چیت شروع کردی۔ مسٹر اڈوانی نے کہا کہ ایوان میں ایک دن بھی کام نہیں ہوا۔ یہ اچھا نہیں ہے۔ اس سے غلط پیغام جائے گا۔
کم سے کم ایک دن تو ایوان چلنا ہی چاہئے۔ کام کاج کے بغیر ایوان کا غیر معینہ مدت کے لئے ملتوی ہونا ٹھیک نہیں ہے۔ اس طرح کے حالات ایوان زیریں میں کبھی نہیں بنے تھے۔ مسٹر ادریس علی نے ان سے کچھ سوال کیا تو مسٹر اڈوانی نے کہا کہ سوال کسی کی ہار جیت کا نہیں ہے۔ جیت صرف پارلیمانی روایت کی ہونی چاہئے او رپارلیمنٹ چلتی رہنی چاہئے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Feel like quitting says miffed advani on parliament deadlock in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply