عمران خان کی پارٹی کا سابق ممبر اسمبلی ہندوستان پہنچا ، سیاسی پناہ کے لیے وزیر اعظم مودی سے درخواست

چنڈی گڑھ: پاکستانی وزیر اعظم عمران خان کی پارٹی پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے ایک سابق ممبر اسمبلی بلدیو کمار نے ہندوستان سے سیاسی پناہ مانگی ہے۔بلدیو گذشتہ ایک ماہ سے اپنی بیوی بھاو¿نا اور دو بچوں کے ساتھ پنجاب کے کھنہ شہر میں اپنی سسرال میں رہ رہا ہے۔ محفوظ سیٹ باری کوٹ سے خیبر پختون خوا اسمبلی کے لیے منتخب ہونے والے سابق ممبر اسمبلی نے کھنہ میں میڈیا کے نمائندوں کو بتایا کہپاکستان مین اقلتیں خود کو غیر محفوظ محسوس کر رہی ہیں۔انہیں ان کے بنیادی حقوق سے محروم کیا جارہا ہے۔ان پر مظالم اور ٹارگٹ کلنگ کے واقعات میں روز افزوں اضافہ ہو رہا ہے۔مجھے بھی دو سال تک جیل میں قید رکھا گیا۔انہوں نے صاف طو رپرکہا کہ اب وہ پاکستان واپس نہیں جائیں گے۔میں اپنے پورے ہوش و حواس میں ہندوستان آیا ہوں۔میں وزیر اعظم نریندر مودی سے التماس کرتا ہوں کہ مجھے سیاسی پناہ دی جائے اور میری حفاظت کا بندوبست کیا جائے۔43سالہ دستار بند شخص بلدیو کمار نے کہا کہ پاکستان میں اقلیتوں کو تہ تیغ کیا جارہا ہے۔یہی نہیں بلکہ ہندو اور سکھ لیڈروں کو بھی قتل کیا جا رہا ہے۔میرے بھائی پاکستان میں ہیں ۔متعدد سکھ و ہندو خاندان نقل مکانی کر کے ہندوستان آنا چاہتے ہیں۔ گوردواروں کی حالت ناگفتہ بہ ہے۔ وہاں اقلیتوں کی کوئی حیثیت نہیں ہے ۔جبراً قبول اسلام کرایا جاتاہے اور ایسے واقعات نہیں ہونے چاہئیں۔ایک سکھ لڑکی کو زبردستی مسلمان بنانے کا حال ہی میں ایک کیس سامنے آیا ہے۔انہوں نے کہا کہ انہیں عمران خان سے بہت توقعات وابستہ تھیں لیکن الیکشن کے بعد وہ بھی بدل گیا۔بلدیو کمار پر 2016میں عمران خان کی پی ٹی آئی کے ایک سکھ ممبر اسمبلی سردار سورن سنگھ کے قتل کا الزام ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Ex mla from imran khans party requests pm modi for asylum in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.