لنچنگ کیس مجرموں کا پھولوں سے استقبال: ملک کے سرکردہ بیوروکریٹس نے مرکزی وزیر کی برطرفی کا مطالبہ کیا

نئی دہلی : جھار کھنڈ میں علیم الدین انصاری نام کے ایک مویشی بیوپاری کو پیٹ پیٹ کر ہلاک کرنے کی واردات کے8مجرموں کی ضمانت کے بعد بی جے پی ممبر پارلیمنٹ و مرکزی وزیر کے ذریعہ ان کا ہار پہنا کر استقبال کیے جانے کا معاملہ کافی زور پکڑتا جا رہا ہے ۔

اس میں سیاسی پارٹیوں کے لیڈروں نے ہی نہیں بلکہ سابق بیورو کریٹس بھی شدید مذمتی بیانات جاری کرنے اور انہیں مودی کابینہ سے باہر نکالنے کا مطالبہ شرو ع کر دیا۔

ممبئی کے سابق پولس کمشنر جولیو ربیرو، سابق چیف انفارمیشن کمشنر وجاہت حبیب اللہ اور41دیگر ریٹائرڈ بیورو کریٹس نے ہجومی تشدد کے مجرم قرار دیے گئے ان لوگوں کو اپنی رہائش گاہ پر پھولوں کے ہار ان کو پہناتے ہوئے خوش آمدید کہنے والے مرکزی وزیر جینت سنہا کو وزارتی کونسل سے نکالنے کا مطالبہ کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مرکزی وزیر و حکمراں جماعت کے سینیئر رکن کی یہ حرکت” اقلیتوں کو قتل کرنے کے لائسنس“ کے مترادف ہے۔واضح ہو کہ وزیر مملکت برائے شہری ہوا بازی نے اس وقت اپنی حرکت سے تنازعہ کھڑا کر دیا تھا جب انہون نے گذشتہ ہفتہ ضمانت پر چھوٹ کر ان سے ملاقات کے لیے ان کی رہائش گاہ آنے والے لنچنگ مجرموں کا استقبال کرتے ہوئے ان کے گلے میں پھولوں کا ہار ڈالا ۔

یاد رہے کہ قصاب علیم الدین انصاری کوگذشتہ سال رام گڑھ تھانہ کے تحت بازار ٹنڈ میں اس شبہ میں پیٹ پیٹ کر ہلاک کر دیا گیا تھا کہ وہ اپنی کار میں گائے کا گوشت لے جا رہا ہے۔

Title: ex bureaucrats demand sinhas sacking for garlanding lynching case convicts in Urdu | In Category: ہندوستان  ( india ) Urdu News

Leave a Reply