یوگی ادتیہ ناتھ اور مایا وتی پر الیکشن کمیشن نے پابندی لگائی ،انتخابی مہم نہیں چلا سکتے

نئی دہلی:2019کے لوک سبھا کے لیے انتخابی مہم کے دوران سیاست دانوں کی منافرت پھیلانے والی فرقہ پرست تقریروں پر خاموشی سادھے رہنے پر سپریم کورٹ سے لتاڑے جانے کے بعد الیکشن کمیشن نے حرکت میں آتے ہوئے اترپردیش کے وزیر اعلیٰ و بی جے پی لیڈر یوگی ادتیہ ناتھ اور سابق وزیر اعلیٰ وبی ایس پی سربراہ مایا وتی کی سرزنش کرتے ہوئے ان دونوں پر اپنی اپنی پارٹی کی انتخابی مہم میں حصہ لینے پر باالترتیب 72اور48گھنٹے کی پابندی عائد کر دی۔

الیکشن کمیشن نے یوگی ادتیہ ناتھ کے انتخابی مہم کے دوران میرٹھ میں تقریر کرتے ہوئے ”علی“ اور ”بجرنگ بلی“کے حوالے سے کہے گئے جملوں پر ان کی گرفت کی اور ان پر72گھنٹے تک کسی بھی انتخابی مہم میں حصہ پر پابندی لگا دی۔

واضح ہو کہ ادتیہ ناتھ نے لوک سبھا انتخابات کو علی اور بجرنگ بلی یعنی ہندوؤں اورمسلمانوں کے درمیان مقابلہ قرار دیا تھا ۔اور کہا تھا کہ اگر ان کے پاس علی ہے تو ہمارے پاس بجرنگ بلی ہے۔

الیکشن کمیشن نے مایا وتی کو بھی دیو بند میں ان کی اس تقریر پر جس میں انہوں نے مسلمانوں سے ایک مخصوص پارٹی کو ووٹ نہ دینے کی اپیل کی تھی ،نوٹس جاری کر دیا۔ بی ایس پی سربراہ سہارنپور ریلی میں بادی النظر میں انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی مرتکب ہوئی تھیں۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Ec bans yogi adityanath from campaigning for 72 hours and mayawati for 48 hours in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.