مسلم مرد یا عورت کا وہاٹس اپ اور سوشل میڈیا پر تصاویر اپ لوڈ کرنا غیر شرعی:دارالعلوم دیوبند کا فتویٰ

دیو بند:دارالعلوم دیوبند نے ایک فتویٰ جاری کرکے کہا ہے کہ اسلام میں مسلمانوں کو خواہ وہ مرد ہوں یا عورت خواتین کا وہاٹس اپ، فیس بک اور ٹوئٹر جیسے سوشل میڈیا پر تصویر اپ لوڈ کرنا جائز نہیں ہے۔ ایک شخص نے دارالعلوم کے شعبہ فتویٰ سے سوال کیا تھا کہ کیا مردوں کا اپنی خواتین کے ساتھ وہاٹس اپ ، ٹوئٹر اور فیس بک پر تصویر ڈالنا جائز ہے۔
اس کے جواب میں کہا گیا ہے کہ مسلمانوں کا خود اپنا،اپنے بیوی بچوں یا کنبہ والوںکے ساتھ تصاویر کھنچواکر یا سیلفی لے کر سوشل میڈیا پر ڈالنا جائز نہیں ہے۔ دارالعلوم کے مہتمم مفتی ابوالقاسم نعمانی کا کہنا ہے کہ اسلام میںبلا کسی جائز ضرورت کے تصویراتروانا اور تصویر کا غیر ضروری استعمال درست نہیں سمجھا گیا ہے۔
قانونی ضرورتوں کے لئے مثلاً پاسپورٹ، اسکول ، کالج وغیرہ میں داخلہ اور دیگر ضروری امور میں تصویر کا استعمال تو درست ہے لیکن تفریح طبع اور فیشن پرستی کے لیے تصویروں کا استعمال مناسب نہیں سمجھا جاتا ہے۔
مولانا نعمانی نے کہا کہ اب جب کہ آج کے دور میں یہ چیزیں عام زندگی کا حصہ ہوگئی ہیں ، انہیں روکنا تو ممکن نہیں ہے لیکن مذہبی اعتبار سے اسے درست نہیں کہا جاسکتا۔ ایک دیگر مدرسہ جامعہ حسینیہ کے مفتی طارق قاسمی نے دارالعلوم کے فتوے کی حمایت کی ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Deoband fatwa asks muslims not to post photos on social media in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply