ملک میں پانچ سو اور ایک ہزار کے نوٹ بند کرنے کا فیصلہ غیر اعلانیہ ایمرجنسی جیسا: آنند شرما

نئی دہلی: ملک میں پانچ سو اور ایک ہزار کے پرانے نوٹوں کے چلن بند کرنے کے فیصلے کی سخت نکتہ چینی کرتے ہوئے راجیہ سبھا میں کانگریس کے ڈپٹی لیڈر آنند شرما نے کہا ہے کہ اس سے غیر اعلانیہ ایمرجنسی اور اقتصادی افراتفری کی صورتحال پیدا ہو گئی ہے اور پوری دنیا میں ہندوستانی معیشت کے سلسلے میں منفی پیغام گیا ہے۔
پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس کے پہلے دن بڑے نوٹ بند کرنےکے معاملے پر اپوزیشن کے کام روکنے کی تحریک پر بحث میں حصہ لیتے ہوئے مسٹر شرما نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کے اس اعلان سے پوری دنیا میں یہ پیغام گیا ہے کہ ہندوستان کی معیشت کالابازاری اور کالے دھن پر ٹکی ہوئی ہے۔ اس کے ساتھ ہی اس سے ملک کے تمام شہری بھی داغدار ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گھریلو خواتین، کسانوں، مزدوروں، اور تنخواہ داروں کی محنت کی کمائی کو غیر قانونی اور کالا دھن بتایا جا رہا اور کہا جا رہا ہے کہ گھوٹالے کرنے والے قطار میں لگ کر نوٹ تبدیل کر ارہے ہیں۔
کانگریسی لیڈر نے سوال کیا کہ حکومت نے کس قانون کے تحت لوگوں کی بینک میں جمع رقم نکالنے کی حد مقرر کی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اس سے پہلے بھی نوٹ بند کیے گئے تھے لیکن اس کے لئے لوگوں کو وقت دیا گیا تھا۔سال 1946 اور 1978 میں بھی نوٹ بندکیے گئے تھے اور اس عمل کو آسان طریقے سے انجام دیا گیا تھا۔
اس سے پہلے ایوان کی کارروائی شروع ہونے پر ڈپٹی چیئرمین پی جے کورین نے کہا کہ کانگریس، ترنمول کانگریس، سماجوادی پارٹی، بہوجن سماج پارٹی، نیشنلسٹ کانگریس پارٹی، جنتا دل یونائیٹڈ اور بائیں بازو کی جماعتوں نے ضابطہ276 کے تحت کارروائی روک کر نوٹ بند کیے جانے کے معاملہ پر بحث کرنے کا نوٹس دیا ہے، جنہیں بحث کے لئے قبول کر لیا گیا ہے۔ اس کے لئے حکومت بھی تیار ہے اور مکمل ایوان اس پر متفق ہے۔لہذا آج کے ایجنڈ ے میں درج کا ررائی کو ملتوی کر کے نوٹ بند کیے جانے کے معاملہپر بحث شروع کی جا رہی ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Demonetisation has led to undeclared emergency economic chaos says congress in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply