دہلی میں ایک ہی کنبہ کی بھوک سے تین بچیوں کی موت کے معاملے کی لوک سبھا میں گونج

نئی دہلی:مشرقی دہلی کے منڈاولی علاقہ کے ایک سائیکل رکشہ والے کی تین بیٹیوں کی بھوک کی وجہ سے موت کا معاملہ جمعرات کو لوک سبھا میں اٹھایا گیا اور بھارتیہ جنتا پارٹی کے ارکان نے اس کے لئے دہلی حکومت کو قصوروار مانتے ہوئے اسے برخاست کرنے کامطالبہ کیا۔

بی جے پی کے رمیش ودھوڑی، مہیش گری اور پرویش ورما نے وقفہ صفر میں یہ معاملہ اٹھا تے ہوئے کہا کہ یہ بدقسمتی کی بات ہے کہ ملک کے قبائلی علاقوں میں غریبوں تک کھانا پہنچایا جا رہا ہے لیکن دہلی کے نائب وزیر اعلی کے حلقے میں تین معصوم بچیوں کی بھوک کی وجہ سے موت ہو جاتی ہے۔

انہوں نے اس حادثے کے لئے دہلی حکومت کو مجرم قرار دیا اور الزام لگایا کہ اس نے راشن تقسیم معاملہ میں 1500 کروڑ روپے کا گھپلہ کیاہے اور اس پر پردہ ڈالنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔مسٹر گری نے کہا کہ دہلی کے نائب وزیر اعلی ٹویٹ کر کے جھوٹ بول رہے ہیں کہ متاثرہ خاندان حال ہی میں ان کے حلقے میں آیا ہے۔

تاہم علاقہ کے لوگوں کا کہنا ہے کہ یہ کنبہ چند روز پہلے ہی یہاں منتقل ہوا تھا اور اس کنبہ کے اڑوس پڑوس سے ابھی تعلقات نہیں ہوئے تھے۔ یہ بھی کہا جاتا ہے کہ ان بچیوں کا باپ ،جو پیشہ سے مزدور تھا، روزگار کی تلاش میں دو روز سے گھر سے نکلا ہوا تھا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Delhi starvation deaths case resonates in parliament in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply