دہلی کالیفٹننٹ گورنر وزارتی کونسل کی تجاویز و اسکیموں کی فائلیں دبا کر نہیں رکھ سکتا: سپریم کورٹ

نئی دہلی: سپریم کورٹ کے جج جسٹس ڈی وائی چندر چوڑ نے کہا ہے کہ دہلی کے لیفٹننٹ گورنر وزارتی کونسل کی جانب سےبھیجی گئی فائلوں کو دبا کر اسکیموں اور تجاویزکو مذاق نہیں بنا سکتے۔
انہوں نے زبانی خیال ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ لیفٹننٹ گورنر اس بات کا پابند ہے کہ وہ اپنے اور دہلی کی وزاتی کونسل کے درمیان ا ختلاف رائے کے جلد تصفیہ کے لیے انہیں صدر تک پہنچا دے۔
جسٹس چندر چوڑ نے ان خیالات کا اظہار پانچ ججی آئینی بنچ نے اروند کیجری وال کی قیادت والی عام آدمی پارٹی کی حکومت کی جانب سے دہلی ہائی کورٹ کے4اگست 2016کے ایک فیصلہ کے خلاف، جس میں کہا گیا تھا کہ دہلی قومی خطہ دارالحکومت کے حوالے سے تمام معاملات مکمل طور پر لیفٹننٹ گورنر کے دائرہ اختیار میں آتے ہیں اور لیفٹننٹ کی رضامندی کے بغیر کچھ نہیں کیا جا سکتا، دائر کی گئیں 9اپیلوں کی سماعت کے پہلے روز کیا۔

Title: delhi lg cannot simply sit on files says justice chandrachud | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply