دہلی ہائی کورٹ نے عام آدمی پارٹی کے نا اہل قرار دیے گئے 20اراکین اسمبلی کی رکنیت بحال کر دی

نئی دہلی: عام آدمی پارٹی کو اس وقت زبردست راحت ملنے کے ساتھ اخلاقی جیت بھی حاصل ہو گئی جب دہلی ہائیکورٹ نے نااہل قرار دیے گئے اس کے20اراکین اسمبلی کی رکنیت بحال کر کے معاملہ الیکشن کمیشن کو واپس بھیج دیا۔
یہ فیصلہ جسٹس سنجیو کھنہ اور جسٹس چندر شیکھر پر مشتمل دو ججی بنچ نے جمعہ کے روز سنایا۔بنچ نے اپنے فیصلہ میں کہا کہ انصاف کے تقاضے کو پورا نہیںکیاگیا اور فطری انصاف کی خلاف ورزی کی گئی ہے اور ان ممبران اسمبلی کو بطور قانون ساز نااہل قرار دینے سے قبل صفائی پیش کرنے کا موقع نہیں دیا گیا۔
فیصلہ کا خیر مقدم کرتے ہوئے دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجری وال نے کہا کہ آخر کار” جیت سچائی کی ہوئی“۔واضح رہے کہ ان ممبران اسمبلی کو منفعت بخش عہدوں پر فائز ہونے کے باعث الیکشن کمیشن کی سفارش پر صدر جمہوریہ نے نااہل قرار دے دیاتھا۔جس کے بعد23 جنوری کو ان 20ممبران اسمبلی میں سے8نے مرکز کے نوٹیفکیشن کو دہلی ہائی کورٹ میں چیلنج کر دیاتھا۔
جس پر24جنوری کو ہائی کوٹ نے الیکشن کمیشن کو نااہل قرار دیے جانے کے معاملہ پر صورت حال جوں کی توں رکھنے اور نااہل قرار دیے جانے کے باعث خالی ہونے والی 20سیٹوںپر انتخابات کرانے کا اعلان کرنے سے روک دیا تھا۔ان اراکین نے اپنے استدال میں کہا تھا کہ الیکشن کمیشن نے غیر ضروری عجلت کا مظاہرہ کرتے ہوئے اور دیگر مدعیان کو صفائی پیش کرنےکا موقع دیے بغیر کارروائی کی ہے۔
ان ممبران نے یہ بھی کہا تھا کہ الیکشن کمیشن نے پارلیمانی سکریٹری کے عہدے کو محض اسامی نہیں بلکہ منفعت بخش عہدے سمجھا۔جبکہ جن اراکین کو پارلیمانی سکریٹری مقر کیا گیا ان کے پاس کوئی ایکزیکٹیو اختیارات نہیں تھے بلکہ ان کی ذمہ داری محض حکومتی کام کاج میں ہاتھ بٹانے تک ہی تھی۔

Title: delhi hc sets aside disqualification of 20 aap mlas arvind kejriwal says truth has won | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply