اتراکھنڈ میں پرائمری اسکول کے ٹیچر نے ایک دلت کا سر قلم کر دیا

نئی دہلی: دلتوں پر بڑھتے مظالم کا ایک اور واقعہ اس وقت منظر عام پر آیا جب ایک پرائمری اسکول کے ٹیچر نے ایک آٹا چکی کو جسے اعلیٰ ذات کے لوگ ہی استعمال کر تے تھے استعمال کر کے ناپاک کردینے پر اونچی ذات کے گاؤں والوں کے سامنے ایک دلت لڑکے کا سر تن سے جدا کر دیا۔ ریاست اتراکھنڈ کے بگیشور ضلع کے ایس پی سکھبیر سنگھ نے بتایا کہ اس دلت نے جس کا نام سوہن رام تھا، اپنی ذات کے خلاف غلیظ الفاظ استعمال کرنے پر احتجاج کیا تو للت کراناٹک نے درانتی سے اس کے گردن پر وار کیا جس سے اس کی موقع پر ہی موت ہو گئی۔
ایس پی نے بتایا کہ ملزم کو قتل کے الزام اور مندرج فہرست ذات و قبائل (انسداد مظالم) قانون کے تحت گرفتار کر کے جمعہ کی صبح الموڑہ جیل بھیج دیا گیا۔یہ واردات منگل کو کڈاریا گاؤں میںاس وقت ہوئی جب سوہن کندن کمار سنگھ کی آٹا چکی سے گیہوں پسوا کر آٹا لے جارہا تھا۔للت نے جب سوہن کو آٹا لے جانتے دیکھا تو اس نے اس کی ذات پر کیچڑ اچھالی اور کہا کہ اس نے تو آٹا چکی کو ہی ناپاک کر دیا۔جس پر سوہن نے اعتراض کیا اور اسے للت نے قتل کر دیا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Dalit man beheaded by upper caste primary teacher for using flour mill in uttarakhand in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply