شیلانگ کے کچھ حصوں میں غیر معینہ مدت کا کرفیو برقرار،فوج نے 500سکھوں کو بچایا

شیلانگ:فوج نے میگھالیہ کے تشدد زدہ شہرشیلانگ میں، جہاں جمعرات کی شب سے ہی جب موٹھپورن علاقہ میں 700سکھ خاندانوں کی آباد ی والی پنجابی لین میں ایک ہجوم نے حملہ کر دیا تھا،فلیگ مارچ کیا۔اور اتوار کو صورت حال میں بہتری دیکھتے ہوئے کرفیو میں سات گھنٹے کی نرمی کی گئی۔دریں اثنا شہر میں نیم فوجی دستوں کی 14مقامات پر تعداد میں اضافہ کر کے فوج کو بھی تیار رہنے کہا گیا ہے۔

تقریباً500سکھوں کو نکال کر فوجی چھاؤنی منتقل کر دیا گیا۔واقعہ یوں بتایا جاتا ہے کہ جمعرات کو ایک سرکاری بس میں کلینر کا کام کرنے والے ایک کھاسی نوجوان نے ایک سکھ لڑکی سے چھیڑ خانی کی تھی ، جس پر بات بڑھ گئی اور دونوں فرقوں میںمار پیٹ ہو گئی۔ اسی دوران کسی نے سوشل میڈیا پر کھاسی نوجوان کی مو ت کی افواہ پھیلا دی جس کے بعدبس ڈرائیور وں کی تنظیم اور کئی مقامی تنظیموں سے وابستہ عناصرنے پنجابی کالونی پر حملہ کر دیا۔

علاقہ میں پتھراؤ اورآتشزنی کی وارداتوں کے بعد شہر کے 14علاقوں میں غیر معینہ مدت کے لیے کرفیو نافذ کر دیا گیاتھا ۔ ریاستی حکومت نے مرکز سے مرکزی نیم فوجی دستوں کی5 اضافی کمپنیاں مانگی ہیں۔ریاستی وزیر داخلہ جمز سنگما نے کہا کہ کچھ فورسز پہنچ گئی ہیں۔انہوںنے مزید کہا کہ یہ فرقہ وارانہ تشدد نہیں تھااور جس بات پر یہان یہ فساد ہوا وہ یہاں کے لیے ایک عام بات ہے۔

جو لوگ تشدد کے الزام میں گرفتار کیے گئے وہ ایسٹ کھاسی پہاڑی علاقہ کے باہر کے ہیں۔انہیں شراب اور پیسے دینے کا لالچ دے کر کچھ لوگوں نے تشدد برپا کرنے پر اکسایا تھا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Curfew stays in parts of shillong army rescues 500 after night long violence in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply