ہزاری باغ میں فرقہ وارانہ فساد کے بعد نافذ کرفیو میں دو گھنٹے کی نرمی

ہزاری باغ(جھارکھنڈ): یہاں اتوار کو فرقہ وارانہ تشدد کے بعد ہزاری باغ اور اس کے گرد و نواح میں نافذ کیے گئے غیر معینہ مدت کے کرفیو میں آج (بدھ) حالات کو کافی حد تک پرسکون دیکھتے ہوئے انتظامیہ نے دو گھنٹے کی ڈھیل دےدی۔پولس ڈپٹی کمشنر مکیش کمار نے بتایا کہ چونکہ گذشتہ24گھنٹے کے دوران کوئی ناخوشگوار واقعہ پیش نہیں آیا اس لیے دوپہر دو بجے سے چار بجے تک کرفیو میں نرمی کرنے کا فیصلہ کیا گیا تاکہ لوگ اشیائے ضروریہ خرید سکیں۔
انہوں نے یہ بھی کہا کہ کرفیو میں نرمی کی مدت بڑھانے کے لیے جمعرات کو حالات کا پھر جائزہ لیا جائے گا ۔اور کرفیو کو مکمل طور پر اٹھا لیے جانے کے بعد امن مارچ یا امن کمیٹی کی میٹنگ کرنے پر غور کیا جا سکتا ہے۔کرفیو ہزار باغ کے علاوہ کٹکم ڈگ اور پیلاول تھانوں کے تحت تمام علاقوں میں بھی لگایا گیا ہے۔گذشتہ شب مزید 18افراد کو گرفتار کیا گیا جن میں کچھ وہ بھی شامل ہیں جنہیں ایف آئی آر میں نامزد کیا گیا ہے۔پولس سپرنٹنڈنٹ اکھلیش کمار جھا نے کہا کہ تلاشی کے دوران دو محلوں سے 15پیٹرول بم بھی برآمد کیے گئے۔اس تشدد کے حوالے سے ہزاری باغ میں مجموعی طور پر چار ایف آئی آر درج کیگئی ہیں۔
یاد رہے کہ ہزاری باغ ریلوے اسٹیشن کے قریب واقع گاو¿ں کود ریوالی میں رام نومی کے جلوس کے دورانمسلم اکثریتی علاقہ سے گذرتے وقت کچھ ریکارڈ شدہ قابل اعتراض نعرے لگائے گئے ۔جس پر ایک فریق نے مشتعل ہو کرجلوس پر پتھراو¿کردیا جس سے بھگدڑ مچ گئی اور 200سے زائد لوگ زخمی ہو گئے جنہیں ڈسٹرکٹ اسپتال پہنچایا گیا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Curfew relaxed for two hours in hazaribagh in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply