رواداری ہندوستانی ثقافت ہے، اس کا تحفظ ہماری آئینی ذمہ داری: نقوی

ممبئی: اقلیتی امور کے مرکزی وزیر مختار عباس نقوی نے کہا ہے کہ رواداری ہندستان کی ثقافت اور عزم رہی ہے اور یہ ہماری آئینی ذمہ داری ہے کہ ہم اس ثقافت کا تحفظ کریں اور اسے مستحکم بنائیں۔ ممبئی کے باندرہ ریلوے اسٹیشن کے پاس “نئے ہندستان۔ ہم کرکے رہیں گے” نمائش اور ثقافتی پروگرام کا افتتااح کرتے ہوئے مسٹر نقوی نے کہا کہ کسی بھی طرح کا تشدد اور انارکی ہندستان کے سماجی ہم آہنگی کے مضبوط تانے بانے اور کثرت میں وحدت کی طاقت کو کمزور کرنے کی ایک ساز ش ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ ہماری آئینی ذمہ داری ہے کہ ہم اس اتحاد کو بچائیں اور اس طرح کی برائی کی طاقتوں کو شکست دیں جو ہماری سماجی ہم آہنگی کو نقصان پہنچانا چاہتے ہیں۔ مسٹر نقوی نے کہا کہ نیو انڈیا ویزن کے تحت وزیراعظم نریندر مودی کی قیادت میں حکومت سماج کے اس غریب طبقے کی فلاح و بہبود اور انہیں بااختیار بنانے کیلئے پورے عزم کے ساتھ کام کررہی ہے جو آزادی کے بعد بھی غریبی کی سطح سے نیچے زندگی بسر کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت نے سماج کے اس طبقے کو دھیان میں رکھتے ہوئے تمام فلاحی اسکیموں پرکام کیا ہے۔ اقلیتی امور کے مرکزی وزیر نے کہا کہ وزیراعظم نے جس نئے ہندستان کی تعمیر کا عزم کیا ہے اسے پورا کرنے کے لئے ہر طبقے کو ایک ساتھ مل کر کام کرنا ہوگا۔ انہوں نے یاد دلایا کہ وزیراعظم نریندر مودی نے نئے ہندستان کی اپیل کی ہے اور اس عہد کو پورا کرنے کیلئے سماج کے ہر طبقے کو مل کر کام کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی سرکار سنکلپ سے سدھی کی مہم میں ہر ایک کو شامل کرنے کی بھر پور کوشش کررہی ہے تاکہ ہندستان میں بدعنوانی ، غربت ، گندگی اور فرقہ پرستی ، دہشت گردی اور ذات پات کی لعنت سے آزاد کرایا جاسکے۔ ہم نے 2022 تک ایک نیا ہندستان بنانے کا عزم کیا ہے۔ مسٹر نقوی نے کہا کہ اس مقصد کے ساتھ پارلیمانی امور کی وزارت ملک بھر کے 39 مقامات پر ایک فوٹو نمائش نیا ہندستان۔ ہم کرکے رہیں گے” کا اہتمام کررہی ہے۔ اس نمائش کا مقصد اس مہم کوفروغ دینا ہے جو نئے ہندستان کیلئے وزیراعظم نریندر مودی نے شروع کی ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Constitutional duty to protect culture of tolerance mukhtar abbas naqvi in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply