سپریم کورٹ تین طلاق کے سلسلے میں 30 مارچ کو غور کے لئے موضوعات طے کرے گا

نئی دہلی: (یو این آئی)سپریم کورٹ مسلم معاشرے میں تین طلاق، حلالہ اور تعدد ازدواج کے سلسلے میں 30 مارچ کو غور کے لئے موضوعات طے کرے گا۔ چیف جسٹس جے ایس کیہر، جسٹس این وی رمن اور جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ کی بنچ نے ‘تین طلاق’ سے متعلق ایشوز طے کرنے کے سلسلے میں سماعت کی، جس کے بعد اسے مارچ کے آخر تک کے لئے موخر کر دیا گیا۔
عدالت نے گذشتہ منگل کو کہا تھا کہ ‘تین طلاق’ سے متعلق موضوعات 16 فروری کو طے کئے جائیں گے اور اس نے تمام فریقوں سے اس سے متعلق نکات پیش کرنے کےلئے کہا تھا۔ سپریم کورٹ نے یہ بھی واضح کیا تھا کہ وہ تین طلاق سے متعلق قانونی تجاویز پر صرف تبادلہ خیال کرے گا۔ سپریم کورٹ اس بات پر فیصلہ نہیں کرے گا کہ مسلم پرسنل لاء کے تحت طلاق پر عدالتیں نظر رکھیں گی یا نہیں۔
سپریم کورٹ نے کہا تھا کہ وہ مسلم معاشرے میں رائج تین طلاق، حلالہ اور تعددازدواج کے قانونی پہلوؤں سے منسلک مسائل پر ہی غور کرے گا۔ عدالت نے واضح کیا کہ وہ اس سوال پر غور نہیں کرے گا کہ کیا مسلم پرسنل لاءکے تحت طلاق کی عدالتوں کی نگرانی کرنی چاہئے، کیونکہ یہ مقننہ کے دائرہ اختیار میں آتا ہے۔ بنچ نے کہا کہ اس حقائق میں کوئی دلچسپی نہیں ہے۔ اس کی دلچسپی صرف قانونی پہلوؤں پر فیصلہ کرنے میں ہے۔ عدالت عظمی نے کہا کہ مسلم پرسنل لائ کے تحت طلاق کو عدالتوں کی نگرانی یا ان کی نگرانی والے ثالثی اداروں کی ضرورت سے متعلق سوال مقننہ کے دائرے میں آتے ہیں۔ مرکز نے مسلم طبقہ میں جاری تین طلاق، طلاق حلالہ اور تعدد ازدواج کی روایت کی مخالفت کرتے ہوئے صنفی مساوات اور سیکولرزم کی بنیاد پر اس پر نئے سرے سے غور کرنے کی حمایت کی ہے۔

Title: constitution bench to decide petitions on triple talaq supreme court | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply