کانگریس اترا کھنڈ میں صدر راج کے نفاذ کے فیصلے کو عدالت میں چیلنج کرے گی

دہرہ دون: کانگریس نے اترا کھنڈ میں صدر راج کے نفاذ پر شدید رد عمل ظاہر کرتے ہوئے اسے جمہوریت کا قتل بتایا اور کہا کہ وہ اس معاملہ کو ہائی کورٹ میں چیلنج کرے گی۔اور وہاں وہ دکھا دے گی کہ نریندرمودی ان تمام ریاستوں کی حکومتوں کو جو کانگریس کے زیر اقتدار ہیں کمزور کرنے پر تلے ہوئے ہیں۔
پارٹی کے سینیئر لیڈر اور معروف وکیل کپل سبل نے کہا کہ اتراکھنڈ میں صدر راج ریاستی اسمبلی میں اکثریت ثابت کرنے کے لیے ہونے والے اجلاس سے عین ایک روز قبل نافذ کیا گیا ہے۔ کیونکہ مرکز اس بات سے واقف تھا کہ ہریش راوت حکومت اپنی اکثریت ثابت کر دے گی۔ لیکن مرکزی وزیر مالیات ارون جیٹلی نے کہا کہ وزیر مالیات نے کہا کہ کابینہ کو ریاست میں آئینی نظام مکمل طورپر ٹوٹ جانے کے بعد یہ فیصلہ کرنے پر مجبور ہونا پڑا۔
واضح رہے کہ 18مارچ کو اتر کھنڈ میں حکمراں جماعت کانگریس کے 9اراکین اسمبلی نے بغاوت کر دی تھی جس کے بعد ہریش راوت کی قیادت والی کانگریس حکومت اقلیت میں آگئی تھی اور ریاست پر صدر راج کے نفاذ کے بادل منڈلانے لگے تھے۔
ریاست میں صدرراج کے لئے صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی کی منظوری ملنے کے بعد صدر راج نافذ ہوتے ہی اسپیکر نے بھی ایک نکتہ اٹھا دیا اور کہا کہ انہیں کوئی نوٹس یا مکتوب نہیں موصول ہوا ہے جس کو مدنظر رکھتے ہوئے اسپیکر نے منحرف اراکین اسمبلی کو نااہل قرار دے دیا اور پیر کو دوپہر میں ریاستی اسمبلی کا اجلاس طلب کر لیا۔ اگرچہ صدر راج نافذ ہونے کے بعد اترا کھنڈ اسمبلی کو تحلیل نہ کر کے صرف معطل کیا گیا ہے۔کہا جارہا ہے کہ ریاست میں صدر راج کے نفاذ کا نو ٹیفیکیشن جلد ہی جاری کر دیا جائے گا۔
اسمبلی کی معطلی کے دوران بی جے پی ، جس نے باغی 9ممبران کی حمایت حاصل ہونے کا دعویٰ کیا ہے، ریاست میں حکومت سازی کا دعویٰ پیش کر سکتی ہے کیونکہ اس کے اپنے27اراکین ہیں اور 9باغی اراکین کے ساتھ حکومت سازی کے لیے مطلوبہ اکثریت اسے حاصل ہو جائے گی۔بی جے پی کے جنرل سکریٹری وجے ورگئیہ نے کہا کہ پارٹی کو 36اراکین کی حمایت حاصل ہے اور ان کی پارٹی ان کے مکتوب کے ساتھ گورنر سے جلد ملاقات کر کے حکومت سازی کا دعویٰ پیش کرے گی۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Congress will challenge govts move to impose president rule in uttarakhand in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply