گجرات میں راہل پر حملہ کی لوک سبھا میںگونج، کانگریس کا ہنگامہ،کارروائی بدھ تک لیے ملتوی

نئی دہلی:کانگریس کے نائب صدر راہل گاندھی پر چار اگست کو گجرات کے بناس کانٹھا میں ہونے والے حملے ،تری پورہ کے چھ ممبران اسمبلی کی بی جے پی میں شمولیت اور کیرل میں سیاسی ہلاکتوں پر بی جے پی اور بایاں بازو کی پارٹیوں میں ایک دوسرے پر زبانی حملوں کے معاملات پر حزب اختلاف کی جماعتوں کے ارکان کے ہنگامے کی وجہ سے پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں لوک سبھا اور راجیہ سبھا میں آج کوئی کام کاج نہیں ہوا اور دونوں ایوانوں کی کارروائی دن بھر کے لیے ملتوی کر دی گئی۔ لوک سبھا میں صبح ایوان کی کارروائی شروع ہونے پر اسپیکر سمترا مہاجن نے مسٹر کھڑگے کو گجرات معاملے پر بولنے کی اجازت دی۔ مسٹر کھڑگے نے الزام لگایا کہ مسٹر گاندھی پر قاتلانہ حملہ کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر میں پتھر بازی ہوتی ہے تو اسے دہشت گرد واقعہ کہا جاتا ہے تو کیا گجرات میں مسٹر گاندھی کی گاڑی پر جو حملہ کیا گیا وہ کشمیر سے آنے والے دہشت گردوں کی کرتوت ہے۔ ان کا اتنا کہتے ہی حکمراں فریق کے ارکان نے مخالفت کی اور اس کے بعد کانگریسی اور حکمراں طبقے کے ارکان کے درمیان نوک جھونک شروع ہو گئی۔ شورشرابے کو دیکھتے ہوئے ایوان کی کارروائی 12 تک کے لئے ملتوی کر دی گئی۔
بارہ بجے جب کارروائی دوبارہ شروع ہوئی تو کانگریس کے ارکان نے مسٹر گاندھی پر گجرات میں ہوئے حملے کو لے کر دوبارہ ہنگامہ شروع کر دیا۔ اسپیکر سمترا مہاجن نے ضروری دستاویز ایوان میں رکھوائے اور اس کے بعد وقفہ صفر کا اعلان کیا۔ دریں اثنا شور و غل میں کوئی کمی نہ ہونے پر پارلیمانی امور کے وزیر اننت کمار نے کہا کہ مسٹر گاندھی خود خصوصی پروٹیکشن گروپ (ایس پی جی) کے حفاظتی قواعد و ضوابط پر عمل نہیں کر تے۔ اس لیے اپوزیشن کے اعتراضات بے بنیاد ہیں۔ترنمول کانگریس کے سدیپ بندوپادھیائے نے کہا کہ مسٹر گاندھی پر حملہ عدم برداشت کی علامت ہے۔ اس کی مذمت کی جانی چاہیے لیکن مسٹر گاندھی کو بھی حفاظت کے قوانین پر عمل کرنا چاہیے۔ اسپیکر کی بار بار کی درخواست کے باوجود جب کانگریس اراکین نے غل غپاڑہ بند نہ کیا تو محترمہ مہاجن نے ایوان کی کارروائی بدھ تک کے لیے ملتوی کرنے کا اعلان کر دیا ۔ادھر راجیہ سبھا میں نریش اگروال سماج وادی کے اراکین کے ساتھ ایوان سے واک آؤٹ کر گئے۔اور اپوزیشن کے دیگر ممبران نعرے بازی کرتے رہے۔ حزب اختلاف کو جواب دینے کے لیے حکمراں بی جے پی کے اراکین نے بھی نعرے بازی شروع کر دی۔جس پر عاجز آکر چیرمین نے ایوان کی کارروائی دن بھر کے لیے ملتوی کر دی۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Congress bjp spar over attack on rahuls car both houses adjourned for the day in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply