چیف جسٹس نے نئی پانچ ججی آئینی بنچ میں پھر چاروں سینیئر باغی ججوں کو شامل نہیں کیا

نئی دہلی:سپریم کورٹ کے چار سینئیر ترین ججوں کے اس الزام کے چارروز بعد بھی کہ سپریم کورٹ میں بنچوں کی تشکیل اور مقدمات کی سماعت کے لیے پسند ناپسند کی بنیاد پر بنچوں کا انتخاب کیا جاتا ہے چیف جسٹس آف انڈیا دیپک مشرا نے جو ایک پانچ رکنی بنچ تشکیل دی اس میں جونئیر ججوں کو ہی شامل کیا گیا ہے۔
سنگین الزامات کے باوجود چیف جسٹس نے ان چاروں سینیئر ترین ججوں جسٹس جے چیلمیشور، جسٹس رنجن گوگوئی، جسٹس ایم بی لوکور اور جسٹس کوریان جوزف کو پانچ ججی بنچ میں شامل نہیں کیا۔
چیف جسٹس دیپک مشرا کی زیر سربراہی تشکیل دی گئی یہ پانچ ججی آئینی بنچ جسٹس اے کے سیکری، جسٹس اے ایم کھانویلکر، ڈی وائی چندرا چوڑ اور جسٹس اشوک بھوشن پر مشتمل ہے۔
یہ بنچ بدھ سے آدھار قانون کی واجبیت ،باہم رضامند بالغوں کے درمیان ہم جنسی کو دوبارہ جرم قرار دینے کے 2013کے فیصلہ ،کیرل کے سابری مالا مندر میں خواتین کے داخلے اور مزیدکئی دیگر اہم امور سمیت بہت سے بڑے مقدمات کی سماعت کرے گی۔
10اکتوبر 2017سے انہی ججوں پر مشتمل بنچ مرکز اور دہلی حکومت کے درمیان انتظامی حد بندی کے حوالے سے اختیارات کی کشمکش کے کیس سمیت کئی اہم ترین معاملاتکی سماعت کر رہی ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Cji continues constitution bench without 4 senior rebel judges in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply