دیوالی کے موقع پرچینی سامان کے بائیکاٹ سے پنجاب کے دکاندار پریشان

جالندھر: پاکستانی مقبوضہ کشمیر میں دہشت گرد وں کے ٹھکانوں پر ہندوستانی فوج کی محدود فوجی کارروائی کے بعد چین کے پاکستان کی حمایت کرنے سے ملک میں چینی اشیاء کے بائیکاٹ کی وجہ الیکٹرانک سامان کی منڈیوں میں مندی چھائی ہوئی ہے۔ گذشتہ سال کے مقابلے اس سال چینی اشیاءکا اب تک محض 20 فیصد سامان بھی نہیں فروخت پایا ہے جس سے دکاندار فکر مند دکھائی دے رہے ہیں۔
چین کی طرف سے پاکستان کی حمایت کرنے کے بعد ملک میں چینی سامان کا بائیکاٹ کرنے کی لہر سی چل پڑی ہے۔ مختلف تنظیموں اور سوشل میڈیا پر بھی لوگوں سے چینی اشیاء کے بائیکاٹ کی اپیل کی جا رہی ہے جس کی وجہ سے ابھی تک بہت سے دکاندار اپنے سامان کی فروخت شروع بھی نہیں کر پائے ہیں۔ سال 2015 میں پنجاب میں مسٹر گرو گرنتھ صاحب کی بے ادبی کے واقعہ کی وجہ سے شرومنی گرودوارا پربندھک کمیٹی کی طرف سے کالی دیوالی منانے کے حکم کی وجہ سے خریداروں کو بھاری نقصان جھیلنا پڑرہا تھا۔
اس سال چینی سامان کا بائیکاٹ کرنے کی وجہ سے مارکٹ میں گاہک کم دکھائی دے رہے ہیں۔ جالندھر میں دیوالی پر تقریباً دو کروڑ روپے کا چینی سامان فروخت ہوتا تھا لیکن اس سال اب تک ٹھیک طرح سے فروخت شروع بھی نہیں ہوپائی ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Chinese products boycott sale dips in punjab in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply