حکومت نے 12سال سے کم عمر کی بچیوں سے ریپ کرنے ولوںکو سزائے موت دلوانے کا فیصلہ کر لیا

نئی دہلی: کٹھوعہ سانحہ کے بعد مرکزی حکومت نے سپریم کورٹ کو ایک مکتوب ارسال کر کے مطلع کیا ہے کہ اس نے پاسکو ایکٹ میں ترمیم کرنے کی کارروائی شروع کر دی ہے جس کے تحت 12سال کی عمر تک کی بچیوں کے ساتھ جنسی زیادتی کے مجرموں کو کم سے کم موت کی سزا یقینی بنایا جائے گا۔ مرکز نے مفاد عامہ میں داخل کی گئی ایک عذر داری کے جواب میں اپنی رپورٹ داخل کی ہے۔ اس معاملہ کی آئندہ سماعت 27اپریل کو ہوگی۔واضح ہو کہ جموں و کشمیر کے کٹھوعہ میںایک سات سالہ بچی کو ایک ہفتہ تک حبس بیجا میں رکھ کر لگاتار اس کی عصمت دری کرنے اور پھر قتل کردینے کی بہیمانہ واردات کے بعد سے ملک گیر پیمانے پر یہ مطالبہ کیا جانےلگا تھا کہ زانیوں کو پھانسی دی جائے۔بی جے پی لیڈروں اور مودی کابینہ کے وزیروں نے بھی ریپ کے مجرموں کو موت کی سزا دینے کا مطالبہ کیا تھا ۔

Title: centre proposes amending pocso act may introduce death penalty | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply