کلکتہ میں ایک بینک کے ملازمین پر ایک خواجہ سرا سے بدسلوکی کرنے کا الزام

کلکتہ:کلکتہ میں ایک بینک کے عملہ کے ذریعہ بینک میں ایک خواجہ سراکے ساتھ بدسلوکی کا معاملہ سامنے آیا ہے۔راج ناتھ سنہا جن کا بینک اکاؤنٹ اسٹیٹ بینک آف انڈیا کے برانچ گوکھلے روڈ کلکتہ میں ہے نے الزام عاید کیا کہ جب وہ منیجر سے ملاقات کرنا چاہتے تھے اس وقت ان کے ساتھ بینک کے عملے نے گالی گلوچ کی۔
نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے مخنثوں کے ایسوسی ایشن کے ممبر نے کہا کہ یہ لوگ کچھ معاملے کو لے بینک کے منیجر سے ملاقات کرنا چاہتے تھے۔بینک کے سیکورٹی گارڈ نے انہیں بینک میں داخل نہیں ہونے دیا اور ان سے بدسلوکی بھی کی۔سنہا نے کہا کہ ان کے ایک ساتھی کے ساتھ بینک اسٹاف بدتمیزی بھی کی۔
سنہا نے کہا کہ اگلے دن انہوں نےبینک منیجر سے ملاقات کی اور ان کا مسئلہ بھی حل کیا تاہم انہوں نے ان کے ساتھ بدسلوکی کرنے والے کے ساتھ کوئی کارروائی نہیں کی۔سنہا نے بینک اسٹاف کے خلاف کلکتہ کے ایک پولس اسٹیشن میں شکایت بھی درج کرائی ہے اوراسٹاف سے تحریری معافی نامہ طلب کیا ہے اور اگر معافی نہیں مانگی جاتی ہے تو سنہا نے وزارت داخلہ سے اس معاملے کا شکایت کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Calcutta bank employees allegedly misbehave with eunuch in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply