کرناٹک کے تشدد زدہ علاقوں میں بی ایس ایف اور آر اے ایف تعینات

بنگلور: کرناٹک میں مہادائی ندی پانی تنازعہ ٹریبونل کے فیصلے کی مخالفت میں بامبے کرناٹک علاقے میں کل ہوئے تشدد اور آگ زنی کے واقعات کے بعد شدید متاثرہ علاقوں میں ریپڈ ایکشن فورس (آر اے ایف) اور بارڈر سیکورٹی فورس (بی ایس ایف) کی چار کمپنیاں تعینات کی گئی ہیں۔
واضح رہے کہ مہادائی پانی تنازعات ٹریبونل کے ذریعہ کرناٹک کے پانچ اضلاع میں پینے کے پانی کے طور پر 7.56 ٹی ایم سی پانی کی مانگ مسترد کئے جانے کے خلاف بامبے کرناٹک علاقے کے پانچ اضلاع کی کچھ کسان تنظیموں اور کنڑ حامی تنظیموں نے کل ہڑتال کا اعلان کیا تھا۔
بند کے دوران کئی مقامات پر آگ زنی اور تشدد کے واقعات ہوئے تھے۔ ریاست کے وزیر داخلہ جی پرمیشورا نے یہاں نامہ نگاروں کو بتایا کہ سب سے زیادہ تشدد زدہ نول گنڈ میں آر اے ایف کی ایک کمپنی کو گشت پر لگایا گیا ہے اور نرگنڈ میں بی ایس ایف کی ایک کمپنی تعینات کر دی گئی ہے۔
دھارواڈ میں آر اے ایف کی ایک کمپنی اور ہبلی میں بی ایس ایف کی ایک کمپنی تعینات کی گئی ہے۔اس کے علاوہ بمبئی کرناٹک علاقے کے پانچ اضلاع میں ریاستی مسلح ریزرو پولیس فورس کے جوانوں کو بڑی تعداد میں تعینات کیا گیا ہے۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Bsf and raf deputed in karnataka in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply