یو کے ہائی کمشنر متعین ہندوستان نے جلیانوالا باغ خونریزی کوافسوسناک بتایا لیکن معافی نہیں مانگی

نئی دہلی: برطانوی ہائی کمشنر متعین ہندوستان سر ڈومینک ایسکوئتھ نے جلیان والا باغ خونریزی کو ”شرمناک“ اور ناہیت درجہ افسوسناک قرار دیا لیکن معافی پھر بھی نہیں مانگی۔

پنجاب کے وزیر اعلیٰ کیپٹن امریندر سنگھ نے جمعہ کے روز اس ہلاکت خیز واردات کے لیے برطانیہ سے معافی کا مطالبہ کیا تھا۔

وزیٹرز بک پر سر ڈومینک ایسکوئتھ نے لکھا ”100سال پہلے رونما ہونے والا جلیانوالا واقعہ برطانوی۔ہندوستانی تاریخ میں ایک شرمناک کارروائی ہے۔

اور اس ے ہونے والے نقصان اور پریشانیوں پر سخت افسوس و صدمہ ہے۔مجھے خوشی ہے کہ برطانیہ اور ہندوستان 21ویں صدی میں داخل ہوتے ہوئے پارٹنر شپ کو مزید فروغ اور استحکام دیا اور پابند عہد ہیں۔ایسکوئتھ نے شہیدوں کی یادگار پر گلہائے عقیدت بھی نچھاور کیے۔

میڈیا کے نمائندوں کے ذریعہ اس خونریزی پر ان کی حکومت کے معافی نہ مانگنے کے حوالے سے کیے گئے سوال کا سیدھا جواب دینے سے بچتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میں جانتا ہوں کہ یہ بہت اہم سوال ہے،میں صرف آپ سے یہی کہوں گا کہ وہ اس بات کو اہمیت دیں کہ وہ 100سال پہلے ہونے والے واقعہ پر حکومت برطانیہ اور عوام کی جانب سے اظہار افسوس کرنے آئے ہیں۔100سال پہلے جو وقاعہ رونما ہوا وہ ایک سانحہ ہے ۔

وزیر اعظم ٹریسا مے نے اس ہفتگہ پارلیمنٹ میں اس واقعہ کو ہماری تاریخ کے ماتھے پر شرمناک داغ سے تعبیر کیا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ ٹریسا کے پیشرو وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون جب ہندوستان آئے تو انہوں نے اسے نہایت شرمناک واقعہ قرار دیا۔خود میرے والدنے، جو تقریباً10سال تک وزیر اعظم رہے ،1960میںاس واقعہ کو برطانیہ کی پوری تاریخ مٰں بدترین واقعہ سے تعبیر کیا تھا

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Britain offers no apology for jallianwala massacre but calls it shameful in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.