کولکاتا میں بی جے پی کی ریلی میں بم دھماکہ ،پولس سے جھڑپ، درجنوں افراد زخمی

کولکاتا :بی جے پی کے کلکتہ ہیڈ کواٹر لال بازار مارچ کے دوران قانون نافذ کرنے والے اداروں اور بی جے پی ورکروں کے درمیان جھڑپ ہونے کی وجہ سے کئی پولس اہلکار سمیت درجنوں افراد زخمی ہوگئے۔ بی جے پی کی ریلی میں بم پھٹنے کے علاوہ ناراض ورکروں نے پولس کے کئی گاڑیوں میں توڑ پھوڑ اور آگ لگادی۔پولس نے کئی لیڈروں کو گرفتار کیا ہے۔ بی جے پی نے قومی سیکریٹری کیلاش وجے ورگیہ ، ریاستی صدر دلیپ گھوش، میرا دیوی ، جے پر کاش مجمدار ، راہل سنہا کو دفعہ 144کی خلاف ورزی کرنے کی وجہ سے گرفتار کیا گیا۔
راجیہ سبھا کی ممبر روپا گنگولی اور بی جے پی خواتین سیل کی لیڈر لاکٹ چٹرجی زخمی ہوگئی ہیں۔انہیں میڈیکل کالج میں داخل کرایا گیا ہے۔ ہوڑہ سے بی جے پی کی ریاستی صدر دلیپ گھوش کی قیادت میں جلوس جب بروبن روڈ پر واقع ٹی پورڈ کے دفتر کے پاس پہنچا تو پولس نے جلوس کو روک دیا۔بی جے پی ورکروں نے پہلے دو بریگیڈ کو توڑ دیا۔ پولس نے تیسرے بریگیڈ تک پہنچنے سے روکنے کیلئے بی جے پی ورکروں پر پانی اور آنسو گیس چھوڑنا شروع کردیا۔ اسی درمیان ریلی میں زور دار دھماکہ ہوا۔اس کی وجہ سڑک پر تین افراد اور ایک خاتون گر گئی جسے پولس نے فوری طور پر اسپتال میں پہنچایا۔تاہم بی جے پی لیڈروں نے بم دھماکے میں بی جے پی لیڈروں کا ہاتھ ہونے سے انکار کیا ہے۔

Title: bomb explosion at bjp rally four injured kailash vijaybargiya arrested | In Category: ہندوستان  ( india )

Leave a Reply