اجودھیا تنازعہ افہام و تفہیم سے طے کرنے کے سپریم کورٹ کے مشورے کا خیر مقدم

نئی دہلی: اترپردیش کے اجودھیا میں بابری مسجد۔رام مندر معاملے کو عدالت سے باہر افہام و تفہیم سے طے کرنے کے لیے عدالت عظمیٰ کی تلقین کا بی جے پی رہنماؤں اورمرکزی وزیر سیاحت مہیش شرما اور مرکزی وزیر آبی وسائل اوما بھارتی نے خیر مقدم کیا ہے۔ مسٹر مہیش شرما نے اس فیصلے پر فوری رد عمل ظاہر کرتے ہوئے صحافیوں سے کہا کہ وہ سپریم کورٹ کے اس فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہیں اور امید کرتے ہیں کہ بات چیت سے رام مندر بنائے جانے کا راستہ ہموار ہو گا۔
انہوں نے کہا کہ تمام متعلقہ فریقوں کو ساتھ لے کر بات چیت کی جائے گی اور مسئلے کا قابل قبول حل تلاش کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ مرکز اور اتر پردیش دونوں میں بھارتیہ جنتا پارٹی کی حکومت ہونے سے اس معاملے میں اس سے قبل آنے والی رکاوٹیں اب نہیں رہیں گی اور اس طرح سے ترقیاتی کاموں میں بھی رفتار آئے گی۔ حکومت اور پارٹی کی سوچ ہے کہ اجودھیا میں رام مندر بننا چاہیے۔ مسٹر مہیش شرما نے کہا کہ رام مندر کوئی سیاسی مسئلہ نہیں ہے بلکہ وہ کروڑوں عقیدتمندوں کے جذبات کا معاملہ ہے اور سپریم کورٹ نے جو راستہ اپنایا ہے اس پر آگے چل کر اس مسئلے کو حل کرلیا جائے گا۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Bjp welcomes sc order on ram temple dispute in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply