نتیش کا شراب بندی کا فیصلہ واپس لینا خود کشی کے مترادف ہوگا:بی جے پی لیڈر

پٹنہ:بھارتیہ جنتا پارٹی کے سینئر لیڈر اور ممبر پارلیمنٹ حکم دیو نارائن یادو نے نتیش حکومت کی طرف سے بہار میں مکمل شراب بندی لاگو کئے جانے کو مناسب درست قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگر نتیش حکومت شراب پر ہر سطح پر پابندی نہ لگاتی تو ریاست بالخصوص غریب خاندانوں کو زبردست پریشانیوں سے ہمہ وقت دوچار رہنا پڑ سکتا تھا ۔
مسٹر یادو نے ریاست کے گوپال گنج ضلع میں زہریلی شراب پینے سے ہونے والی ہلاکتوں پر گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس افسوس ناک واقعہ کے لئے خود وہی لوگ ذمہ دار تھے۔ انہوں نے کہا کہ مسٹر کمار مکمل شراب بندی نافذ کرکے شیر کی سواری کر رہے ہیں اور ان کے اس فیصلے کی زبردست پذیرائی ہو رہی ہے لیکن اگر وہ اس فیصلے کو وہ اگر واپس لیتے ہیں تو یہ ان کے لئے خودکشی کے مترادف ہوگا۔
بی جے پی لیڈر نے کہا کہ ریاست میں شراب بندی نہ کی گئی ہوتی تو غریب خاندان کے لوگ سب سے زیادہ متاثر ہوتے۔ جو لوگ بہار حکومت کی پالیسیوں میں خامی نکال رہے ہیں وہ در اصل شراب مافیا کی وکالت اور ان کے مفادات کا تحفظ کر رہے ہیں۔ انہوں نے دلت، پسماندہ طبقے اور نوجوانوں سے شراب بندی کی مہم کو کامیاب بنانے کی اپیل کی۔

Read all Latest india news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from india and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Bjp mp hukumdev yadav bats for prohibition in Urdu | In Category: ہندوستان India Urdu News

Leave a Reply